جمعہ , 22 اکتوبر 2021

پاکستانی شہری عمر نے سعودی عرب میں خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

جدہ : سعودی عدالت نے خاتون سے زیادتی کے مرتکب تین ملزمان کو سزائے موت سنادی تینوں مجرمان کا گزشتہ روز سر قلم کردیا گیا، جن میں دو سعودی اور ایک پاکستانی شامل ہے۔تفصیلات کے مطابق شراب کے نشے میں گھر میں گھس کر خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنانے والے تین مجرمان کا عدالت کے حکم پر سرتن سے جدا کردیا گیا، ملزمان دیگر سنگین وارداتوں میں بھی ملوث تھے۔سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق وزارت داخلہ نے بتایا ہے کہ سعودی شہری ھتان بن سراج بن سلطان الحربی، سلطان بن سراج بن سلطان الحربی اور پاکستانی شہری محمد عمر محمد لئیق جمالی شراب پی کر جدہ کے ایک گھر میں زبردستی داخل ہوگئے تھے۔

ملزمان سیکیورٹی فورس کے بھیس میں گھر میں داخل ہوئے، ملزمان نے خنجر کے بل پر ایک خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنایا اور گھر کے ایک اور کمرے کا دروازہ توڑ کر دوسری خاتون کے ساتھ بھی زیادتی کی، ملزمان واردات کرکے با آسانی فرار ہوگئے تھے۔بعد ازاں سیکیورٹی فورس کے اہلکاروں نے انہیں گرفتار کرلیا، تفتیش کے بعد تینوں ملزمان پر پر فرد جرم عائد کردی گئی تھی، ملزمان نے عدالت کے روبرو اعتراف جرم بھی کرلیا۔فوجداری کی عدالت نے الزام ثابت ہونے پر تینوں کو (حد الحرابہ) کی سزا سنائی تھی، حد الحرابہ اسلامی قانون جرم و سزا کے تحت ایسے جرم کی سزا ہے جو ملک میں بدامنی انارکی اور خلفشار پھیلانے پر دی جاتی ہے۔اپیل کورٹ اور پھر سپریم کورٹ نے تینوں کو سر قلم کرنے کی جو سزا سنائی گئی تھی اس کی توثیق کردی تھی، ایوان شاہی سے عدالتی فیصلے پر عملدرآمد کا فرمان جاری کردیا گیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

سعودی عرب پر ایک اور ڈرون حملہ

ریاض: عرب ذرائع ابلاغ نے جنوبی سعودی عرب میں جارح اتحاد کے خلاف یمن کی …