ہفتہ , 16 اکتوبر 2021

افغانستان اور ایران کے سرحدی فورسس کی جانب سے افغان شہریوں کو دریا میں ڈبونے سے متعلق خبروں کی تردید

ایرانی سرحدی فورس نے ایران اور افغانستان کی مشترکہ سرحدوں میں ایرانی اہلکاروں کی جانب سے افغان شہریوں پر تشدد اور ان کو دریا میں ڈبونے کے الزامات کو یکسر مسترد کردیاہے۔اسلامی جمہوریہ ایران کی پولیس نے بعض چینلوں کی جانب سے جاری شدہ ویڈیو کو کہ جس میں ایران کے سکیورٹی اہلکاروں کیجانب سے افغان شہریوں کو دریا میں ڈبونے کا دعوی کیا گیا تھا من گھڑت قرار دیتے ہوئے کہا کہ تحقیقات سے یہ ثابت ہوا کہ ایران اور افغانستان کی سرحد پر اس طرح کا واقعہ رونما نہیں ہوا اور یہ بالکل جھوٹ ہے۔

درایں اثناء افغانستان کی وزارت خارجہ کے قائم مقام محمد حنیف اتمر نے کہا ہے کہ ایران و افغانستان کی مشترکہ سرحد پر ایران کی سرحدی فورسز کی جانب سے افغان باشندوں کی گرفتاری اور ان پر تشدد کئے جانے سے متعلق من گھڑت دعووں سے اجتناب کرنا چاہئیے۔واضح رہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور افغانستان کے درمیان بہت اچھے تعلقات قائم ہیں اور ایرانی سرحدی اہلکار، سرحدوں کی حفاظت کرتے ہوئے، قانونی آمد و رفت کیلئے داخلی اور خارجی راستوں میں افغان بھائیوں کو سہولیات فراہم کرتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی و ہندوستانی وزرائے خارجہ کی ملاقات، باہمی تعاون کے مزید فروغ کے لئے پر عزم

نیویارک: اسلامی جمہوریہ ایران اور ہندوستان کے وزرائے خارجہ کے درمیان اقوام متحدہ کی جنرل …