ہفتہ , 16 اکتوبر 2021

لیرا بحران، ترکی نے غیرملکی اتحادیوں سے مدد مانگ لی

ترکی کی کرنسی لیرا کی مسلسل گرتی قیمتوں کو مستحکم کرنے اور موجودہ معاشی بحران سے نکلنے کے لیے انقرہ نے اپنے عالمی اتحادیوں سے مدد کی اپیل کی ہے۔تین سینیر ترک عہدیداروں نے کہا ہے کہ ترک حکومت نے فنڈز اکٹھا کرنے کی ہنگامی کوشش کےلیے اپنے غیر ملکی اتحادیوں سے مدد طلب کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ انقرہ کو خدشہ ہے کہ اقتصادی بحران کے نتیجے میں ترکی کی کرنسی لیرا مزید زوال کا شکار ہوسکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ترک وزارت خزانہ اور مرکزی بینک کے عہدیداروں نے حالیہ دنوں میں جاپان اور برطانیہ کے اپنے ہم منصبوں کے ساتھ کرنسی تبادلہ پہر بات چیت کے ساتھ قطر اور چین کے ساتھ ترکی کو دی گئی سہولیات میں اضافے کی بات کی ہے۔ترکی کی حکمراں جماعت ‘آق’ کے نائب صدر،جودت یلماز نے جمعرات کو اس بات کی تصدیق کی ہے کہ ترکی کرنسی کے تبادلے کے معاہدوں کا خواہاں ہے۔

انہوں نے پینل میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم کرنسی کے تبادلے کے مواقع کے سلسلے میں نہ صرف امریکا بلکہ دوسرے عالمی اتحادیوں سےبھی بات چیت کررہےہیں۔ تاہم انہوں نے اس حوالے سے مزید تفصیلات نہیں بتائیں۔یہ پیش رفت گذشتہ ہفتے ترک لیرا کی ریکارڈ کم ترین سطح پر آنے کے بعد سامنے آئی ہے۔ایک ترک عہدیدار نے رائیٹرز کو بتایا کہ ان مذاکرات کے بعد ترکی نے نے اطمینان محسوس کیا ہے لیکن یہ واضح نہیں ہے کہ ایسے وقت میں معاہدوں کو کب تک حتمی شکل دی جاسکتی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی و ہندوستانی وزرائے خارجہ کی ملاقات، باہمی تعاون کے مزید فروغ کے لئے پر عزم

نیویارک: اسلامی جمہوریہ ایران اور ہندوستان کے وزرائے خارجہ کے درمیان اقوام متحدہ کی جنرل …