بدھ , 10 اگست 2022
تازہ ترین

فرانس اور صیہونی حکومت کے درمیان ایک بار پھر کشیدگی شروع ہو گئی

غرب اردن کے بعض حصوں کو صیہونی حکومت میں ضم کرنے کی اسرائيل کی سازش پر فرانس کی حکومت اور صیہونی حکومت کے درمیان کشیدگي جاری ہی تھی کہ بیت المقدس میں ایک فرانسیسی شہری کو حراست میں لیے جانے پریہ کشیدگي اور بڑھ گئي ہے۔ابلاغ نیوز نے غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ۔ فلسطین انفارمیشن سینٹر کی رپورٹ کے مطابق فرانس کی وزارت خارجہ نے سنیچر کے روز ایک بیان جاری کر کے کہا ہے کہ صالح حموری نامی فلسطینی نژاد فرانسیسی شہری کو مقبوضہ بیت المقدس میں تیس جون کو پھر حراست میں لے لیا گيا ہے جبکہ دو سال قبل پیرس کی بہت زیادہ کوششوں سے مذکورہ شہری کو رہا کیا گيا تھا۔ فرانسیسی وزارت خارجہ نے زور دے کر کہا ہے کہ اس نے سفارتی ذرائع اور اپنے قونصل خانے کے ذریعے صیہونی حکومت سے اس فرانسیسی شہری کو حراست میں لیے جانے کے سلسلے میں جواب طلب کیا ہے اور وہ حموری اور ان کی اہلیہ کی رہائي کے لیے ہر ممکن کوشش کرے گي۔

قابل ذکر ہے کہ اس فلسطینی نژاد فرانسیسی شہری کو صیہونی حکومت نے سن دو ہزار پانچ اور سن دو ہزار گيارہ میں ایک یہودی ربی عوفادیا یوسف کے قتل کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔ دوسری جانب فرانس غرب اردن کے بعض حصوں کو صیہونی حکومت میں ضم کرنے کی اسرائيل کی کوششوں کی مخالفت کر رہا ہے۔ فرانس کے صدر میکراں بارہا، صیہونی وزیر اعظم نیتن یاہو کو اس سلسلے میں پیرس کی مخالفت سے آگاہ کر چکے ہیں اور انھوں نے اس منصوبے کے تخریبی نتائج کی طرف سے تل ابیب کو انتباہ دیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بھارت بارشوں اور سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 73 ہوگئی

نئی دہلی: بھارتی ریاست کرناٹک میں موسلادھار بارشوں اور سیلاب سے ہونے والی ہلاکتوں کی …