جمعرات , 27 جنوری 2022

ایران کا اقوام متحدہ سے یمنی شہریوں پر سعودی عرب کے قاتلانہ حملے رکوانے کا مطالبہ

تہران؛ ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ یمنی نہتے شہریوں بالخصوص خواتین اور بچوں کے تحفظ کیلئے ضروری اقدامات اٹھائے۔ابلاغ نیوز نے ارنا نیوز کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ”سید عباس موسوی نے” سعودی عرب کی زیر قیادت اتحاد کیجانب سے یمن کے شہر الحجہ اور الجوف میں شادی کی تقریب پر حملے کے نتیجے میں 25 نہتے شہریوں بشمول خواتین اور بچوں کے جان بحق ہونے کی شدید مذمت کی۔

انہوں نے حملے میں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بڑی افسوس کی بات ہے کہ یمن میں سعودی اتحادی کے فوجیوں کے جرائم کے سامنے بین الاقوامی برادری کی خاموشی کا سلسلہ جاری ہے۔موسوی نے بین الاقوامی برادری اور انسانی حقوق کی تنظیموں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یمن میں سعودی اتحاد کے جرائم کو روکنے کی ہر ممکن کوشش کریں۔

انہوں نے کہا کہ یمن پر وار کرنے والے جارحوں کیلئے فوجی ساز و سامان تیار کرنے ممالک جو یمنی خواتین اور بچون کو بموں کے ذریعے بے دردی سے قتل کرتے ہیں، وہ سب ان جرائم میں برابر کے شریک ہیں اور ان کو یمنی عوام اور بین الاقوامی برادری کے سامنے جوابدہ ہونا ہوگا۔ایرانی ترجمان نے کہا کہ بڑے افسوس کی بات ہے انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنے والا ملک سعودی عرب کا حالیہ دنوں میں اقوام متحدہ نے امریکی دباؤ میں آ کر سعودی عرب کا نام کو بچوں کے قاتلین کی فہرست سے نکال دیا ہے۔انہوں نے اقوام متحدہ سے اپنے اس فیصلے پر نظر ثانی کرنے سمیت حلموں کو جلد از جلد روکنے اور یمنی نہتے شہریوں کے تحفظ کیلئے ضروری اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

عرب امارات میں سرمایہ کاری صفر ہوجائے گی، یمنی رہنما کا سخت انتباہ

صنعا: یمن کی اعلی سیاسی کونسل کے سینیئر رکن محمد البخیتی نے بیرونی سرمایہ کاروں …