ہفتہ , 15 مئی 2021

ایران دشمن کی کسی بھی جارحیت کو نظر انداز نہیں کریگا؛ ترجمان وزارت خارجہ

تہران: ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ایران کے مسافر بردار طیارے کو روکنے سے متعلق امریکہ کے لڑاکا طیاروں کی جارحیت پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ ہم ایرانی قوم کے خلاف کسی بھی مخاصمانہ اور متنازعہ اقدام کا فیصلہ کن اور مناسب جواب دیں گے۔ابلاغ نیوز نے سحر نیوز کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہاسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے امریکہ میں قائم سینٹکام دہشت گرد تنظیم کے ترجمان کی جانب سے ایرانی ماہان ایئرپرجارحیت کی ذمہ داری قبول کرنے اور اس مہم جوئی اور خطرناک اقدام کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بین الاقوامی ہوا بازی کے قانون کی خلاف ورزی اور خطے میں امن و سلامتی کے خلاف قرار دیا۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ نے تصدیق کی ہے کہ دو ایف ۔ 15 لڑاکا طیارے ماہان ایئر کی پرواز کے قریب گئے تھے تا کہ ایک ہزار میٹر کے محفوظ فاصلے پر رہ کر طیارے کا معائنہ کیا جا سکے جبکہ یہ اقدام مضحکہ خیز اور بین الاقوامی قوانین کے خلاف ہے۔دو جنگی طیارے اس طرح مسافر بردار طیارے کے قریب آئے کہ مسافر بردار طیارے کو خطرہ محسوس ہوا اور پائلٹ نے ہوشیاری کا مظاہرہ کرتے ہوئے جہاز کو ان دونوں لڑاکا طیاروں کے ٹکراؤ سے بچانے کے لئے پرواز کی اونچائی کو تیزی سے کم کیا جس کی وجہ سے اس طیارے کے 12 مسافر زخمی ہوگئے، تاہم پائلٹ نے پرواز کو جاری رکھتے ہوئے بیروت ہوائی اڈے پر بحفاظت اتار لیا اور اس کے کچھ دیر بعد تہران کے لئے اڑان بھری اور بہ حفاظت امام خمینی انٹرنیشنل ائیر پورٹ پر لینڈ کر گیا۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …