اتوار , 1 اگست 2021

ایران کے مقابلے میں امریکہ کی جنگی ناتوانی کا اعتراف

مغربی ایشیا میں امریکی دہشتگردوں کے مرکز سینٹکام کے کمانڈر نے اعتراف کیا ہے کہ امریکہ ایران کے خلاف جنگ کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا۔

مغربی ایشیا میں امریکی دہشت گردوں کے مرکز سینٹکام کے کمانڈر مک کینزی نے علاقے میں ایران کے بارے میں امریکی حکام کے بے بنیاد دعؤوں کا اعادہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ علاقے میں ایران کا تخریبی رویہ بڑھتا جا رہا ہے۔

دہشت گرد امریکی فوج کے کمانڈر مک کینزی نے اس بات کا اعتراف کیا کہ مغربی ایشیا میں امریکہ کی موجودگی کی وجہ اس علاقے میں پایا جانے والا تیل ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ ایران کے خلاف جنگ کا خواہاں نہیں ہے اور تہران کے خلاف زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی پالیسی فوجی نوعیت کی نہیں ہے۔

واضح رہے کہ دو ہزار اٹھارہ میں امریکی حکومت نے بین الاقوامی ایٹمی معاہدے سے علیحدگی اختیار کرنے کے بعد ایران کے خلاف شدید ترین پابندیاں عائد کیں اور تہران کے خلاف اس کی اشتعال انگیز پالیسیاں اب بھی جاری ہیں۔ تاہم امریکا اپنا کوئی بھی مقصد حاصل نہیں کرسکا اور زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی اس کی پالیسی بھی ناکام ہوگئی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

جنگی علاقے میں داخل ہونے والا ہر صحافی ہمیں آگاہ کرے: طالبان ترجمان

کابل: طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا ہےکہ جنگی علاقے میں داخل ہونے والا …