ہفتہ , 16 اکتوبر 2021

فلسطینی قیدی کو اگر کورونا ہوا تو اس کی ذمہ داری صیہونی حکومت پر عائد ہو گی

مقبوضہ فلسطین میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے باوجود غاصب صیہونی حکومت فلسطینی قیدیوں کی سلامتی کے بارے میں روائتی لاپرواہی کا مظاہرہ کر رہی ہے۔

العہد کی آج جمعرات کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی قیدیوں کے امور کی کمیٹی نے کہا ہے کہ اسرائیل کی جیل میں قید مزید 2 فلسطینی قیدی کورونا وائرس میں مبتلا ہو گئےہیں۔ اس کمیٹی کا کہنا ہے کہ صیہونی حکام کی لاپرواہی کی وجہ سے اب تک 137 فلسطینی قیدی کورونا وائرس میں مبتلا ہو چکے ہیں کہ جن میں سے زیادہ تر جلبوع جیل میں قید ہیں۔

صیہونی حکومت کورونا کے پھیلاؤ کے باوجود فلسطینی قیدیوں کی سلامتی کے حوالے سے لاپرواہی سے کام لے رہی ہے جس کی وجہ وہ سے ان کی زندگی کو خطرہ لاحق ہو گیا ہے۔

ادھر فلسطینی انتظامیہ کے صدر محمود عباس نے کہا ہے کہ فلسطینی قیدیوں کی صحت و سلامتی کی تمام تر ذمہ داری صیہونی حکومت پر عائد ہوتی ہے۔

اس وقت تقریبا چھے ہزار فلسطینی اسرائیل کے مختلف جیلوں میں بند ہیں جنہیں کورونا وائرس کے پھیلاؤ اور اسرائیل کی توسیع پسندانہ پالیسی کی وجہ سے سب سے زیادہ نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے۔

دوسری جانب فلسطینی تنظیموں نے کورونا وائرس کے پیش نظر عالمی برادری سے غزہ کا محاصرہ ختم کرانے کی اپیل کی ہے۔

اسرائیل نے سن 2006 سے غزہ کا مکمل محاصرہ کر رکھا ہے جس کے پیش نظر اس علاقے میں کورونا وائرس سے نمنٹے میں انتہائی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی و ہندوستانی وزرائے خارجہ کی ملاقات، باہمی تعاون کے مزید فروغ کے لئے پر عزم

نیویارک: اسلامی جمہوریہ ایران اور ہندوستان کے وزرائے خارجہ کے درمیان اقوام متحدہ کی جنرل …