جمعہ , 14 مئی 2021

ایرانی مایہ ناز ایٹمی سائنسدان پر خودکش حملہ ، شہادت کی تصدیق

اسلامی جمہوریہ ایران کے ایک مایہ ناز ایٹمی سائنس داں کو ٹارگٹ کلنگ کرکے شہید کر دیا گیا۔

تازہ ترین اطلاعات کے مطابق ایٹمی سائنسدان محسن فخری زادہ کو جمعے کی شام تہران کے مضافاتی علاقے دماوند میں دھماکے سے اور  پھر بعد میں فائرنگ کرکے شہید کر دیا گیا۔

مزید اطلاعات کے مطابق یہ حملہ 2:30 منٹ پر ہوا ، یاد رہے اسرائیلی وزیر اعظم نے 2018 میں ایٹمی سائنسدان کا باقاعدہ نام لیا تھا اور اس کو نشانہ بنانے کے لئے 2 سال سے کوششیں کر رہے تھے ۔ اس کے علاوہ اسرائیلی نیوز میں بھی ان کی تصاویر شائع کی گئی تھیں ۔

دھماکے میں زخمی ہونے والے ان کے ساتھیوں کا نزديکی اسپتال میں علاج چل رہا ہے۔

فارس نیوز ایجنسی کے رپورٹر نے رپورٹ دی ہے کہ کچھ دیر پہلے دماوند علاقے کے آبسرد شہر میں ایک دھماکے کی آواز سنی گئی۔

عینی شاہدین نے دھماکے اور اس کے بعد فائرنگ کی واردات کی تائید کی۔ بتایا جاتا ہے کہ حملے میں ایک گاڑی کو نشانہ بنایا گیا ۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اس حملے میں تین سے چار افراد ہلاک ہوئے جن کا تعلق دہشت گردوں سے ہے۔

فارس نیوز ایجنسی کے رپورٹر نے آبسرد علاقے کے اسپتال میں دو افراد کی لاشوں کی تائید کی ہے۔

واضح رہے کہ صیہونی حکومت نے 2018 کی شروعات میں اعلان کیا تھا کہ موساد کے جاسوسوں نے ایران کے ایٹمی سائنس داں کی ٹارگٹ کلنگ کی کوشش کی تھی لیکن وہ کامیاب نہیں ہو سکے تھے۔

اس حوالے سے واللا نیوز نے رپورٹ دی تھی کہ موساد کے جاسوسوں نے ایران کے ایک ایٹمی سائنس داں محسن فخر زادہ مہابادی کی ٹارگٹ کلنگ کی کوشش کی تھی جو ایٹمی ریکٹر کے ذمہ دار تھے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …