جمعہ , 18 جون 2021

وزیر اعظم نے یو این اجلاس میں کرونا کے لیے 10 نکاتی پلان پیش کر دیا

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے خصوصی اجلاس سے ورچوئل خطاب میں کرونا سے نمٹنے کے لیے 10 نکاتی ایمرجنسی پلان پیش کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم پاکستان نے یو این خصوصی اجلاس سے ورچوئل خطاب میں کہا کہ کرونا وبا کے خاتمے تک غریب ملکوں کے قرض معطل اور پس ماندہ ملکوں کے قرضے معاف کیے جائیں۔

وزیر اعظم نے کہا قرضوں میں ریلیف کرونا کے خاتمے تک جاری رکھا جائے، اور امیر ملکوں کی جانب سے مدد کے وعدوں پر عمل درآمد کرایا جائے۔

انھوں نے کہا قرضوں کی ری اسٹرکچرنگ کی جائے، کم شرح سود پر قلیل المدتی قرضے فراہم کیے جائیں، کرونا سے نمٹنے کے لیے 500 ارب ڈالر کا خصوصی پیکج مختص کیا جائے۔

انھوں‌ نے مزید کہا کہ دوسری جنگ عظیم کے بعد کرونا وائرس نے دنیا میں بڑی تباہی مچائی ہے، امیر ملکوں نے معیشت بچانے کے لیے ٹریلین ڈالرز خرچ کیے، لیکن ترقی پذیر ملک معیشت کو سنبھالا دینے کے قابل نہیں ہیں۔

وزیر اعظم نے ترقی پذیر ملکوں سے دولت کی غیر قانونی منتقلی فوری روکنے کا بھی مطالبہ کیا، انھوں نے کہا کرپٹ سیاست دانوں اور مجرموں کی جانب سے چرائے گئے اثاثوں کو فوری طور پر ان ملکوں کو واپس کیا جائے ۔

عمران خان نے کہا کرونا کی پہلی لہر میں ہماری حکمت عملی کامیاب رہی، پاکستان میں کرونا پر قابو پانے کے لیے اسمارٹ لاک ڈاؤن متعارف کرایا گیا۔

یہ بھی دیکھیں

کابل میں پھر دھماکے، آٹھ افراد جاں بحق، شیعہ ہزارہ نشانے پر

کابل: افغانستان کے دارالحکومت میں جمعرات کو ہونے والے دو الگ الگ بم دھماکوں میں …