ہفتہ , 15 مئی 2021

جمال خاشقچی کے قتل کا ایک اور المناک پہلو اجاگر

ترکی کا کہنا ہے کہ جمال خاشقچی کے قتل کے شواہد مٹانے کا مشن دو رکنی سعودی ٹیم نے انجام دیا تھا۔

ابلاغ نیوز کی رپورٹ کے مطابق  آل سعود کے مخالف معروف صحافی جمال خاشقچی کے قتل کے تعلق سے ترکی کے حکام نے باضابطہ طور پر کہا ہے جمال خاشقچی کے قتل کے شواہد مٹانے میں ریاض حکومت پوری طرح ملوث ہے۔

ترکی کے حکام نے کہا ہے کہ سعودی عرب نے جمال خاشقجی قتل کے شواہد مٹانے کے لیے ماہرین کی دورکنی ٹیم بھیجی گئی تھی۔ ترک حکام کا کہنا ہے کہ یہ ٹیم دو افراد پر مشتمل تھی جن میں ایک کیمسٹ اور دوسرا ٹوکسی کولوجسٹ یعنی زہریلی چیزوں کا ماہر شامل تھا۔

جمال خاشقچی کے قتل کے المناک واقعے پر ساری دنیا میں آل سعود کے خلاف شدید ردعمل کا مظاہرہ کیا گیا تھا، تاہم سعودی حکام نے امریکہ کی حمایت اور پیٹر و ڈالر کی بنا پر حاصل شدہ اپنا اثر رسوخ استعمال کرکے اس معاملے کو دبانے کی بھرپور کوشش کی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …