اتوار , 28 نومبر 2021

اپنے آخری دن گن رہے ٹرمپ کی ایران کے خلاف پھر ہرزہ سرائی

صدارتی انتخابات میں شکست کھانے کے بعد اپنے آخری دن گن رہے امریکہ کے موجود صدر ٹرمپ کی ایران کے خلاف ہرزہ سرائیوں کا سلسلہ جاری ہے۔

تازہ ترین بیان میں انہوں نے بغداد میں امریکی سفارتخانے یا وہی فوجی اڈے پر ہوئے حالیہ راکٹ حملے کا ذمہ دار ایران کو قرار دیا ہے۔

فارس نیوز کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ نے ایک ٹوئیٹ میں کوئی ثبوت پیش کئے بغیر فائر کئے گئے مارٹر کی کچھ تصاویر پوسٹ کیں اور سفارت خانے پر ہوئے حملے کے لئے ایران کو مورد الزام ٹھہرایا۔

ٹرمپ جو انتخابات میں اپنی شکست کے ازالے کے لئے ہر ممکن راستہ اپنانے پر اتر آئے ہیں، انہوں نے ٹوئیٹ میں لکھا کہ اتوار کو بغداد میں ہمارے سفارتخانے پر راکٹ حملہ ہوا ہے، تین راکٹ ناکام رہے، آپ اندازہ لگا سکتے ہیں وہ راکٹ کس نے فائر کئے؟ ایران نے!

ٹرمپ نے اپنی ہرزہ سرائی جاری رکھتے ہوئے مزید لکھا کہ کوئی بھی امریکی اگر مارا جاتا ہے، اُس کا ذمہ دار ہم ایران کو سمجھیں گے۔

خیال رہے کہ عراق کے دارالحکومت بغداد میں امریکی سفارتخانہ کہ جسے عراقی تنظیمیں ایک فوجی اڈے سے تعبیر کرتی ہیں، اب تک بارہا راکٹ حملوں کا نشانہ بن چکا ہے اور اس پر آخری حملہ اتوار کے روز ہوا جس میں کم از کم آٹھ راکٹ امریکی اڈے کی جانب فائر کئے گئے۔

یہ بھی دیکھیں

لبنان کو ایرانی تیل کی ترسیل کا سلسلہ جاری

تہران: ایرانی ایندھن کا حامل ایک اور کاروان شام کے راستے لبنان میں داخل ہو …