جمعہ , 22 اکتوبر 2021

ہراسگی کی زیادہ شکایات شعبۂ تعلیم و صحت سے ملیں: صوبائی محتسب بلوچستان

صوبائی خاتون محتسب بلوچستان صابرہ اسلام کا کہنا ہے کہ صوبے بھر میں خواتین کی ہراسگی سے متعلق زیادہ شکایات تعلیم اور صحت کے شعبوں سے ملیں۔

کوئٹہ سے جاری کیئے گئے ایک بیان میں صوبائی خاتون محتسب بلوچستان صابرہ اسلام نے کہا ہے کہ صوبے میں جائے ملازمت پر خواتین کے تحفظ کا ادارہ بھرپور کام کر رہا ہے۔

خواتین کو ہراساں کرنے والے پی ٹی آئی اکاؤنٹس کیخلاف بھی کارروائی کریں گے، شیریں مزاری

انہوں نے بتایا کہ 2 سال میں سرکاری و نجی دفاتر سے خواتین کو ہراساں کیئے جانے کی 26 شکایات ملیں، جن میں سے 18 شکایات کا فیصلہ کیا جا چکا ہے۔

صابرہ اسلام کا کہنا ہے کہ ہراسگی سے متعلق کیسز میں ملزمان کو مختلف نوعیت کے جرمانے اور سزائیں دی گئیں۔

صوبائی محتسب نے بتایا کہ بلوچستان کے ہر ضلع میں ہراسگی کے خلاف شکایات سیل قائم کر دیئے گئے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ خواتین کی ہراسگی کے خلاف ہماری زیرو ٹالرینس کی پالیسی ہے، خواتین میں ہراسگی کے خلاف اعتماد اور آگہی بڑھ رہی ہے۔

صوبائی خاتون محتسب صابرہ اسلام کا یہ بھی کہنا ہے کہ دفاتر میں خواتین سے غیر اخلاقی رویہ، زبردستی تعلق، مراعات کو ذاتی تعلق کہنا ہراسگی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی و ہندوستانی وزرائے خارجہ کی ملاقات، باہمی تعاون کے مزید فروغ کے لئے پر عزم

نیویارک: اسلامی جمہوریہ ایران اور ہندوستان کے وزرائے خارجہ کے درمیان اقوام متحدہ کی جنرل …