جمعہ , 18 جون 2021

اسرائیل کی غزہ پربمباری جاری، اے پی، الجزیرہ سمیت میڈیا کے دفاتر بھی تباہ

غزہ: اسرائیل کی غزہ پر بمباری جاری ہے اور اس دوران ایک اور بلند عمارت کو نشانہ بنایا جہاں الجزیرہ اور امریکی خبر ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) سمیت دیگر بین الاقوامی میڈیا کے دفاتر بھی تباہ ہوگئے جو اسرائیلی فوج کی غزہ میں میڈیا کو خاموش کرنےکی بدترین کوشش ہے۔

غیرملکی خبرایجنسیوں کی رپورٹس کے مطابق الجلا ٹاور کے مالک نے میڈیا کو اسرائیلی حملے کے حوالے سے پہلے ہی خبردار کردیا تھا اور عمارت کو خالی کردیا گیا تھا۔

https://twitter.com/AJEnglish/status/1393554498170363907?s=20

الجزیرہ میں جاری کی گئیں ویڈیوز میں دیکھا جاسکتا ہے کہ 12 منزلہ عمارت کارروائی کے بعد لمحوں میں تباہ ہورہی ہے اور آسمان کی جانب دھواں بلند ہورہا ہے۔

ویڈیو بنانے والی خاتون نے آگاہ کیا کہ ‘ٹاور گر چکا ہے، آپ جب کبھی نے صحافیوں کو غزہ سے رپورٹنگ کرتے ہوئے دیکھتے ہیں تو وہ اکثر اس عمارت کی چھت پر کھڑے ہوکر رپورٹ کرتے تھے لیکن اب اسرائیلی فوج نے کارروائی کرکے اس عمارت کو تباہ کردیا ہے۔

الجزیرہ کی اینکر نے جذباتی انداز میں کہا کہ ‘یہ چینل خاموش نہیں ہوگا، الجزیرہ خاموش نہیں ہوگا، ہم اس کی ابھی ضمانت دیتے ہیں’۔

اسرائیلی فوج نے اس حوالے سے فوری طور پر کوئی ردعمل نہیں دیا۔

مذکورہ عمارت میں میڈیا کے علاوہ دیگر شعبوں کے دفاتر بھی قائم تھے اور کئی اپارٹمنٹس پر مشتمل تھی۔

قبل ازیں اسرائیلی فوج نے غزہ سٹی میں ہی گنجان آباد مہاجر کیمپ کو پر ایک اور کارروائی کرتے ہوئے کم ازکم 10 فلسطینیوں کو نشانہ بنایا تھا جہاں خواتین اور بچے بھی شہید ہوگئے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

کابل میں پھر دھماکے، آٹھ افراد جاں بحق، شیعہ ہزارہ نشانے پر

کابل: افغانستان کے دارالحکومت میں جمعرات کو ہونے والے دو الگ الگ بم دھماکوں میں …