جمعہ , 18 جون 2021

فلسطینیوں کی مظلومیت پر عربوں کے مگرمچھ کے آنسو

فارس نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق قطر کے سابق وزيراعظم حمد بن جاسم نے واضح طور پر کہا ہے کہ عرب حکومتوں نے مسئلہ فلسطین کے تعلق سے غداری کی ہے، ان کا کہنا تھا کہ اگر آج عرب حکام اسرائیلی حملوں کی مذمت کر رہے ہیں تو اس کا مقصد اپنے تخت وتاج کو محفوظ رکھنا ہے۔ اس سے قبل جنگ غزہ کے آغاز پر انہوں نے کہا تھا کہ عرب حکام غزہ کی مظلومیت پر مگرمچھ کے آنسو بہا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جو لوگ فلسطین کی صورتحال پر آنسو بہا رہے ہیں اگر وہ اس کی وجہ معلوم کریں تو انہیں اندازہ ہوجائے گا کہ نیتن یاہو کی حکومت اس صورتحال کی بانی و باعث ہے۔

حمد بن جاسم نے رشیا ٹوڈے کوانٹریودیتے ہوئے کہا کہ اسرائیل کے حالیہ تشدد آمیز اقدامات کے مقابلے میں عرب ملکوں کا ردعمل متضاد ہے، بعض نے امن و امان کی برقراری پر زور دیا ہے اور بعض موجودہ صورتحال پر بالکل خاموش ہیں۔

قطر کے سابق وزیراعظم نے کہا کہ جو ممالک اسرائیل کے ساتھ تعلقات کی برقراری کے خواہاں ہیں انہیں چاہییے کہ یہ تعلقات کم ازکم عالمی قراردادوں کے مطابق ہوں۔

واضح رہے کہ غزہ پر صیہونی حکومت کی وحشیانہ بمبماری میں شہید اور زخمی ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد میں ہر لمحے اضافہ ہورہا ہے اور اس کو رکوانے کے لئے عرب حکام گھسے پیٹے بیانات دینے سے بھی گریزاں دکھائی دے رہے ہیں۔

عرب ليگ اور عربوں کے زیر اثر اسلامی ملکوں کی تنظیم بھی محض بیان بازی کے سوا کچھ کرنے کے لئے تیار نہیں ہے، بعض ملکوں کے غدار حکمرانوں کی طرف سے مسلسل فلسطینیوں کے زخموں پر نمک پاشی کی جارہی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

کابل میں پھر دھماکے، آٹھ افراد جاں بحق، شیعہ ہزارہ نشانے پر

کابل: افغانستان کے دارالحکومت میں جمعرات کو ہونے والے دو الگ الگ بم دھماکوں میں …