جمعرات , 21 اکتوبر 2021

نتین یاہو کے خلاف پھر مظاہرے شروع ہو گئے

فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق صیہونی حکومت کے وزیراعظم نتین یاہو کے خلاف مظاہروں کی تازہ لہر شروع ہوگئی ہے اور کل مقبوضہ فلسطین میں ان کے گھر کے سامنے ہونے والے مظاہرے میں نیتن یاہو کے خلاف نعرے لگائے گئے۔

رپورٹوں کے مطابق نتین یاہو کے خلاف ہونے والے ان مظاہروں کے شرکاء نے ہاتھوں میں ایسے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر”مجرم اور کرپٹ وزیراعظم” جیسے نعرے لکھے ہوئے تھے۔

اس سے قبل بھی کورونا کے پھیلاؤ کے باوجود نیتن یاہو کی مالی بدعنوانیوں کے خلاف مظاہرے ہوتے رہے ہیں، مظاہرین کا ایک اعتراض یہ بھی ہے کہ نیتن یاہو کی حکومت نے کورونا کی وبا سے نمٹنے کے لئے ٹھوس اور بنیادی اقدامات انجام نہیں دیئے ہیں۔

واضح رہے کہ صیہونی حکومت کے وزیراعظم کے خلاف مالی بدعنوانی کے الزام میں مقدمے کی سماعت شروع ہو گئی ہے۔

بیت المقدس کی عدالت میں اس مقدمے میں نتین یاہو پر رشوت ستانی، فریبکاری اور امانت میں خیانت کا الزام ہے۔ مقدمے کی سماعت سے قبل نیتن یاہو نے میڈیا کے سامنے اپنے آپ کو بے قصور اور الزامات کو بے بنیاد بتاتے ہوئے دعوی کیا تھا کہ بائیں بازو کی جماعتوں سے وابستہ ذرائع ابلاغ نے انھیں اقتدار میں پہنچنے سے روکنے کے لیے اس قسم کے الزامات کو ہوا دی ہے۔

اس سے قبل نتین یاہو مختلف بہانوں سے اپنے خلاف مقدمے کی سماعت کی کارروائی سے بچتے رہے ہیں اور انھوں نے عدالت سے درخواست کی تھی کہ انھیں مقدمے کی سماعت کے دوران حاضری سے چھوٹ دی جائے لیکن عدالت نے ان کی درخواست منظور نہیں کی تھی۔

نتین یاہو نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو عدالت میں حاضر نہ ہونے کے لیے بہانہ بنانے کی کوشش کی تھی۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی و ہندوستانی وزرائے خارجہ کی ملاقات، باہمی تعاون کے مزید فروغ کے لئے پر عزم

نیویارک: اسلامی جمہوریہ ایران اور ہندوستان کے وزرائے خارجہ کے درمیان اقوام متحدہ کی جنرل …