پیر , 24 جنوری 2022

عراقچی اور اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے نمائندے کا افغانستان کے امور پر تبادلہ خیال

تہران: خارجہ تعلقات کی اسٹریٹجک کونسل کے سکریٹری نے افغان عوام کی مدد میں اقوام متحدہ کے کردار سے ایران کی حمایت پر زور دیا۔

ایرانی خارجہ تعلقات کی اسٹریٹجک کونسل کے سکریٹری ‘سید عباس عراقچی’ نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے نمائندے ‘مت کنودسن’ کے ساتھ ایک ملاقات میں اس ملک کی موجودہ صورتحال، سیکیورٹی مسائل، داعش کی دہشت گردی اور افغانستان میں حکمرانی کے مستقبل پر تبادلہ خیال کیا۔

اس ملاقات میں ایرانی عہدیدار نے ایران کا موقف افغانستان کے مسائل کے حل کے لیے علاقائی نقطہ نظر کو اپنانا، کابل میں ایک جامع حکومت کی تشکیل، اس ملک میں سلامتی کو یقینی بنانا اور اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ سرحدی تحفظ کو بھی یقینی بنانا ہے۔

عراقچی نے افغانستان کے مسائل پر ہمارے ملک کی خصوصی توجہ خاص طور پر افغانستان کے لیے صدر کے خصوصی نمائندے کی تقرری کے ساتھ، پر زور دیا۔

انہوں نے افغانستان کی موجودہ نازک صورتحال کے لیے امریکہ کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ مغربی ایشیا کے خطے میں امریکی موجودگی کا نتیجہ خطے کے لوگوں کیلیے انتشار اور بدامنی کے سوا کچھ نہیں ہوا۔

اس موقع پر اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے نمائندے نے افغانستان میں ایران کے موثر کردار اور افغان پناہ گزینوں کی میزبانی کو سراہتے ہوئے کہا اس مسئلے پر ایران کے ساتھ اقوام متحدہ کے تعاون کو برقرار رکھنے کی ضرورت پر زور دیا۔

انہوں نے افغانستان کی صورت حال کی وضاحت کرتے ہوئے افغان عوام کے بنیادی مسائل، خاص طور پر سردیوں کے موسم کی آمد کے ساتھ، پر بین الاقوامی برادری کی سنجیدگی سے توجہ پر زور دیا۔

یہ بھی دیکھیں

ترکی اور اسرائیل کے وزرائے خارجہ کے مابین باضابطہ گفتگو

انقرہ: ترکی اور اسرائیل کے وزرائے خارجہ کے مابین ٹیلی فونی گفتگو ہوئی ہے۔ ترکی …