ہفتہ , 28 مئی 2022

ویانا مذاکرات کا تسلسل؛ ایران، یورپی یونین اور یورپی ٹروئیکا کے مشترکہ اجلاس کا انعقاد

تہران: غیر منصفانہ امریکی پابندیوں کی منسوخی کے سلسلے میں ویانا میں ہونے والے مذاکرات میں شریک ایرانی وفد کے سربراہ علی باقری کنی نے تین یورپی ممالک (جرمنی، برطانیہ اور فرانس) کے نمائندوں سے ملاقات کی۔

یہ ملاقات آسٹریا کے دارالحکومت ویانا کے "کوبرگ ہوٹل” میں ہونے والے ان مذاکرات کے آٹھویں دور کے دوران ہے۔
ایرانی چیف مذاکرات کار اور یورپی ٹروئیکا کے نمائندوں کے درمیان آج کی ملاقات ماہرین کے ایک گروپ کی موجودگی میں ہوئی؛ جس کی اطلاع ایرانی وزارت خارجہ کے میڈیا ڈیپارٹمنٹ نے دی ہے۔
باقری کنی پیر کی صبح آسٹریا کے دارالحکومت ویانا پہنچے، جہاں انہوں نے اپنی آمد کے بعد پہلی ملاقات میں یورپی یونین اور تین یورپی ممالک کے نمائندوں سے ملاقات کی اور اس کے ساتھ مختلف متعلقہ امور پر ماہرین کی ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رکھا۔
ویانا میں ان کی غیر موجودگی کے دوران اسلامی جمہوریہ ایران اور 4+1 گروپ کے نمائندوں کے درمیان ماہرین کی سطح پر اور دو ورکنگ گروپس کے فریم ورک کے اندر پابندیوں اور انتظامی اقدامات کے خاتمے کے لیے مذاکرات جاری رہے۔
ایرانی چیف مذاکرات کار اور تینوں یورپی ممالک کے وفود کے سربراہ مزید مشاورت کے لیے جمعے کو اپنے دارالحکومت واپس پہنچ گئے تھے، اس کے ساتھ ساتھ ماہرین کی ملاقاتیں بھی پہلے کی طرح جاری رہیں، اسی طرح پابندیوں کے خاتمے اور ایگزیکٹو کے لیے ورکنگ گروپ کی میٹنگیں بھی ہوئیں۔
باقری کنی نے تہران میں اپنی موجودگی کے دوران تکنیکی اور خصوصی شعبوں میں سینئر حکام اور اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ وسیع مشاورت کی۔
مذاکرات کا آٹھواں دور 27 دسمبر کو شروع کیا گیا تھا، اور شریک وفود کی تصدیق کے مطابق، اب تک اس میں کچھ پیش رفت ہوئی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکہ نے وسطی ایشیا کو اپنی بائیولوجیکل سرگرمیوں کا مرکز بنا لیا: روس

امریکہ نے وسطی ایشیا کو اپنی بائیولوجیکل سرگرمیوں کا مرکز بنا رکھا ہے اور روس …