جمعہ , 1 جولائی 2022

میری ’کردار کشی‘ کیلئے مواد تیار کیا جارہا ہے، عمران خان

چئیرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے دعویٰ کیا ہے کہ مخالفین نے ایسی کمپنیز کی خدمات حاصل کی ہیں جو ان کی کردار کشی کے لیے ’مواد تیار‘ کر رہی ہیں۔

انہوں نے اپنی خیالات کا اظہار گزشتہ دنوں ’ہم نیوز‘ پر نشر کیے جانے والے اداکار شان شاہد کے شو میں کیا۔

انٹرویو کے اداکار نے کرکٹر سے سیاست دان بننے کے سفر میں سیاست اور پانچویں نسل کی جنگ میں استعمال ہونے والی مارکیٹنگ کمپنیوں کے بارے میں سوال کیا۔

ان کے تبصرہ اس وقت سامنے آیا جن پی ٹی آئی سے منسلک سوشل میڈیا اکاؤنٹ کے ذریعے سپورٹرز کو مصنوعی انٹیلی جنس کے ذریعے بنائی جانے والی ’جعلی ویڈیو‘ کے بارے میں خبردار کیا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ’میں بہت سی مافیاز کا سامنا کر چکا ہوں‘ ان میں سب سے بڑی مافیا شریف مافیا ہے، وہ ہمیشہ ذاتی سطح پر حملہ کرتے ہیں کیونکہ وہ گزشتہ 35 سالوں سے کرپشن میں ملوث ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جب کوئی ان کی بدعنوانیوں کی نشاندہی کرتا ہے تو یہ اس کی کرداری کشی کرتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ماضی میں ان کی سابقہ اہلیہ جمائمہ گولڈ اسمتھ کو نشانہ بنایا گیا ان کے خلاف مہم چلاتے ہوئے ان پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ ’یہودی لابی‘ کا حصہ ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جمائمہ کے خلاف ’انٹک ٹائلز‘ کی برآمدات کے جعلی کیسز بنائےگئے۔

مختصر وقفے کے بعد پروگرام میں واپسی پر سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ شریف خاندان عید کے بعد ان کی کردار کشی کے لیے مہم چلانے کی تیاریاں کر چکا ہے۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ ’ان عید ختم ہوگئی ہے، آپ دیکھیں گے کہ وہ میری کردار کشی کے لیے مکمل تیار ہیں، انہوں نے مواد تیار کرنے کے لیے کمپنیوں کی خدمات حاصل کی ہیں۔

انہوں نے مزیف کہا کہ 60 فیصد وفاقی کابینہ ضمانت پر ہے، وزیر اعظم شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز بھی ضمانت پر ہیں، مریم بھی ضمانت پر ہیں اور نواز شریف کے خلاف فیصلہ سنایا جاچکا ہے جبکہ نواز شریف کے صاحبزادے ملک سے باہر بھاگے ہوئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کے پاس اپنے دفاع کے لیے کیا موجود ہے؟

انہوں نے کہا کہ جمہوریت میں انہیں اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کا جواب دینا ہوگا۔

عمران خان نے کہا کہ’ اگر آپ ضمانت پر ہیں تو آپ کسی جمہوریت میں نہیں آسکتے اور آپ کوئی عہدہ نہیں لے سکتے‘۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے موجودہ حکومت کے حوالے سے دعویٰ کیا کہ بجائے جوابدہ ہونے کے وہ اربوں روپے کی کرپشن کریں گے، شریفوں کی توجہ بس میری کردار کشی پر مرکوز ہے۔

عمران خان نے کہا کہ جمائمہ کا جرم کیا تھا؟ وہ میری بیوی تھی، اب انہیں فرح خان مل گئی ہیں فرح خان کا جرم یہ ہے کہ وہ بشریٰ بیگم کی قریبی ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ شریفوں نے سابق چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار اور مرحوم جج ارشد ملک کی طرح کی مزید ’ٹیپس‘ تیار کی ہیں۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ ’یہ مافیا کا انداز ہے، میں صرف یہ چاہتا ہوں کہ قوم یہ سمجھے کہ اگر آپ کسی کا نام خراب کرنا چاہتے ہیں تو ایسی کمپنیاں ہیں جو آپ کی مدد کر سکتی ہیں‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی نے مئی کے آخر تک اسلام آباد تک اپنے لانگ مارچ کا اعلان کیا تھا جس کی وجہ سے شریف عوام کی نظروں میں ان کی عزت کو کم کرنا اور ان کے کردار کو مجروح کرنا چاہتے ہیں۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ ’وہ پہلے بھی ایسا کرتے رہے ہیں، یہ کوئی نئی بات نہیں ہے‘۔

’حقیقی آزادی‘ کیلئے مہم کا آغاز میاں والی سے ہوگا
قبل ازیں،چیئرمین چیئرمین پی ٹی آئی نے اعلان کیا تھا کہ وہ 6 مئی سے میانوالی میں ایک ریلی نکال کر ’حقیقی آزادی‘ کے لیے اپنی مہم کا آغاز کریں گے۔

ایک ویڈیو پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ وہ مغرب کے بعد میانوالی آئیں گے اور اس مہم کا مقصد ملک کو ’امپورٹڈ حکومت‘ سے نجات دلانی ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ’ میں ان لوگوں سے شروعات کر رہا ہوں جنہوں نے مجھے پہلی بار قومی اسمبلی کے لیے منتخب کرایا‘۔

انہوں نے شہریوں نے ریلی میں شرکت کرنے کی اپیل بھی کی۔

یہ بھی دیکھیں

بھارت میں یوٹیوب کو مسلمانوں کے استحصال کیلئے استعمال کئے جانے کا انکشاف

نیویارک:بھارت میں یوٹیوب کو ہندوتوا قوم پرستوں کے ہاتھوں مسلمانوں کے استحصال کیلئے استعمال کئے …