بدھ , 30 نومبر 2022

مقاومتی محاذ کی فتح نے دنیا کو صبر کی روش اپنانے کا درس دیا ہے، عبداللہ صبری

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شام کے وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ یہ یمنی عوام کا محکم عزم ہی تھا، جس نے دشمن کی چالوں کو ناکام بنایا۔
شام میں یمن کے سفیر کا کہنا ہے کہ یمن اور شام کی فتح دراصل مقاومتی بلاک کی فتح ہے اور اسی کامیابی نے دنیا کو صبر کی اسٹریٹجی اپنانے کا درس دیا ہے۔ فارس نیوز کے بین الاقوامی ڈیسک کے مطابق، شام میں یمن کے سفیر ”عبد اللہ صبری” نے عید وحدت یمن (مئی 1990ء میں جنوبی اور شمالی یمن کے اتحاد) کے جشن کے موقع پر ”مقاومت” کی راہ پر گامزن رہنے پر زور دیا۔ ”المسیرہ” کی رپورٹ کے مطابق، عبد اللہ کا کہنا تھا کہ آج ہم ایک ہی وقت میں یمن کا قومی دن، غزہ میں ”سیف القدس” کی پہلی سالگرہ اور اسی طرح لبنان (صیہونیوں کا جنوبی لبنان سے انخلاء) میں مقاومت کی فتح کے بائیسویں سال کے موقع پر جشن منا رہے ہیں۔ ہماری مزاحمت نے ثابت کیا ہے کہ ہماری قوم کبھی بھی اپنے جائز اور قانونی حق سے دستبردار نہیں ہوگی۔

صبری نے صہیونی جارحیت کے خلاف شامی حکومت اور عوام کے ساتھ یمنی عوام کی یکجہتی پر مزید زور دیتے ہوئے کہا کہ یمن، شام کے ساتھ تعلقات کو مزید گہرا کرنے کا خواہاں ہے۔ اس موقع پر شامی وزیر دفاع ”علی محمود عباس” نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ یمنی عوام کا محکم عزم ہی تھا، جس نے دشمن کی چالوں کو ناکام بنایا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم اور یمنی ملت ایک ہی قوم ہیں اور امید کرتے ہیں کہ دونوں اقوام ہمیشہ ایک دوسرے کے ساتھ اسی طرح کھڑی رہیں گی۔ آخر میں محمود عباس نے اس امید کا اظہار کیا کہ عرب یکجہتی دوبارہ سے اپنی سطح پر واپس آجائے گی اور عرب ممالک کے درمیان تعلقات وہی ہوں گے، جو موجودہ فتنوں اور چیلنجز سے پہلے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

سپاہ پاسداران نے جنوبی علاقے میں ایک عرب انٹیلی جنس سروس کی سازشوں کو بے نقاب کیا

تہران:سپاہ پاسداران انقلاب نے ایک ایک رجعت پسند عرب انٹیلی جنس سروس کے ایک ایجنٹ …