اتوار , 25 ستمبر 2022

بیمار خاتون کے رونے پر امریکی ڈاکٹروں نے جرمانہ عائد کر دیا

نیویارک سے تعلق رکھنے والی ایک امریکی خاتون کیمیلے جانس نے حال ہی میں ایک ٹوئٹ کرتے ہوئے ایک اسپتال کے بل کی رسید پوسٹ کی اور لکھا کہ میری چھوٹی بہن بیماری تھی اور ناچار ہو کے اُس نے کلینک پہنچ کے ڈاکٹر سے رجوع کیا۔

امریکی خاتون کے مطابق اپنی تکلیف سے پریشان انکی بہن کلینک میں رونے لگی تو ڈاکٹروں نے اُسے تسلی دینے کے بجائے اُس پر چالیس ڈالر کا جرمانہ عائد کر دیا۔

کیمیلے جانس کے پوسٹ کردہ اسپتال کے بل میں جہاں ان کی بہن کے علاج کے حوالے سے اخراجات درج تھے وہیں پر چالیس اضافی ڈالر کی رقم بھی بل میں شامل کی گئی تھی جو کلینک میں رونے کے سبب جرمانے کے طور پر اُس خاتون سے وصول کی گئی تھی۔

امریکہ سے موصول ہونے والی خبریں یہ بتاتی ہیں کہ یہ واقعہ اپنی نوعیت کا کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے بلکہ اس قسم کے حیران کن واقعات امریکہ میں رونما ہوتے رہتے ہیں اور اس سے قبل بھی بیماروں کو حتیٰ سرجری کے دوران رونے پر جرمانہ ادا کرنا پڑا ہے۔

امریکی اسپتال کے اس حیران کن اور افسوسناک رویے پر سوشل میڈیا صارفین کی طرف سے خاصی تنقید کی جا رہی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ہیلری کلنٹن نے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو دوسرا ہٹلر قرار دیدیا

واشنگٹں:امریکا کی سابق وزیر خارجہ نے ملک کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو دوسرا ہٹلر …