اتوار , 25 ستمبر 2022

الیکشن کمیشن کو 5 مخصوص نشستوں پر 2 جون کو فیصلہ کرنے کا حکم


۔لاہور ہائیکورٹ نے پانچ مخصوص نشستوں کے معاملے پر الیکشن کمیشن کو دو جون کو فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کی جانب سے پانچ مخصوص نشستوں پر اراکین اسمبلی کا نوٹیفکیشن جاری نہ کرنے کے خلاف تحریک انصاف کی درخواست پر سماعت کی جس سلسلے میں الیکشن کمیشن اور پی ٹی آئی کے وکیل عدالت میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے الیکشن کمیشن کے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ کیوں پراسس نہیں کر رہے، پراسس کہاں رہا ہوا ہے؟ اگر کوئی پارٹی الیکشن کمیشن کے پاس پیش نہ بھی ہو تو الیکشن کمیشن فیصلہ کر دے۔

اس پر وکیل الیکشن کمیشن نے مؤقف اختیار کیا کہ ہم پراسس کر رہے ہیں، تحریک انصاف کی جانب سے نوٹیفکیشن جاری کرنے کی درخواست موصول ہوئی ہے جب کہ (ن) لیگ نے نوٹیفکیشن جاری نہ کرنے کے حوالے سے درخواست دائر کی، دونوں پارٹیوں کو سننے کے لیے نوٹس جاری کیے گئے، اب یہ معاملہ سننے کے لیے فکس کردیا ہے۔

تحریک انصاف کے وکیل نے کہا کہ الیکشن کمیشن جان بوچھ کر معاملے کو لٹکا رہا ہے۔

بعد ازاں عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد الیکشن کمیشن کو اس حوالے سے دو جون کو فیصلہ کرنے کا حکم دیا۔

پی ٹی آئی اور (ن) لیگ کی درخواستیں سماعت کیلئے مقرر

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے مخصوص نشستوں کے نوٹیفکیشن کا معاملہ سماعت کے لیے مقرر کردیا ہے۔

چیف الیکشن کمیشن کی سربراہی میں تین رکنی بینچ تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ن) کی درخواستوں پرجمعرات 2 جون کو سماعت کرے گا جس کے لیے دونوں جماعتوں کو نوٹس جاری کردیےگئے ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف نے 3 خواتین اور 2 اقلیتی نشستیں دینے کا مطالبہ کر رکھا ہے جب کہ مسلم لیگ (ن) نے 20 نشستوں پرضمنی انتخاب کے بعدپارٹی پوزیشن کے تحت نوٹیفکیشن کا مطالبہ کیاہے۔

واضح رہےکہ سپریم کورٹ نے منحرف ارکان پنجاب اسمبلی کے معاملے پر پی ٹی آئی کا ریفرنس منظور کرتے ہوئے پنجاب اسمبلی کے 25 ارکان کو ڈی سیٹ کردیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

سینیٹ کی رکنیت کا حلف اٹھانے کے بعد اسحاق ڈار بطور وزیر خزانہ حلف اٹھائیں گے

اسلام آباد: لندن میں مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف اور وزیراعظم شہباز شریف …