ہفتہ , 1 اکتوبر 2022

تہران:ایران کیخلاف آئی اے ای اے میں کسی قرارداد کی حمایت نہیں کریں گے: روس

ویانا میں بین الاقوامی تنظیموں میں روسی مندوب نے کہا ہے کہ ہم آئی اے ای اے کے بورڈ آف گورنرز کی جانب سے منظورہونے والی ایران مخالف کسی بھی غیر تعمیری مغربی قرارداد کی حمایت نہیں کریں گے۔

میخائیل اولیانوف نے کہا کہ ویانا مذاکرات میں مغربی شرکاء (امریکہ، برطانیہ، فرانس اور جرمنی) کی جانب سے بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی کے بورڈ آف گورنرز کے موجودہ اجلاس میں ایران کے بارے میں قرارداد منظور کرنے کا ارادہ تعمیری نہیں ہے۔
اولیانوف نے کہ روس کسی بھی طرح سے اس قرارداد کے ساتھ خود کو منسلک نہیں کرے گا۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہم جتنا آگے بڑھیں گے، اتنا ہی واضح ہو جائے گا کہ ویانا مذاکرات میں IAEA کے بورڈ آف گورنرز کے موجودہ اجلاس میں ایران کے بارے میں ایک قرارداد کی منظوری کے بارے میں مغربی شرکاء کی نیت جوہری معاہدے کے لیے غیر تعمیری ہے۔
انہوں نے کہا کہ آئی اے ای اے کے اگلے اجلاس میں، جو 6 سے 10 جون تک ویانا میں منعقد ہو رہا ہے، ایران کے بارے میں ایک مسودہ قرارداد پر غور کیا جا سکتا ہے۔ خاص طور پر، ہم ایجنسی کی ایران میں تین جوہری تنصیبات تک کافی رسائی نہ ہونے کے بارے میں بات کر سکتے ہیں۔
یہ بات قابل ذکر ہے کہ جوہری معاہدے کے یورپی رکن ممالک (برطانیہ، جرمنی اور فرانس) امریکہ کے ساتھ مل کر اسرائیلی حکام کے ساتھ حالیہ مشاورت کے نتیجے میں ویانا میں پیر سے شروع ہونے والے بورڈ آف گورنرز کے موجودہ اجلاس میں ایران کے خلاف ایک قرارداد کا مسودہ تیار کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور بدھ کے روز جائزہ لیا جائے گا
اس دستاویز جو کچھ بے بنیاد دعووں کو دہراتے ہوئے، نے ایران سے مطالبہ کیا کہ اقوام متحدہ سے منسلک اس تنظیم کے ساتھ تعاون کرے۔
ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے جمعہ کے روز یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزپ بورل کے ساتھ ٹیلی فونگ پر گفتگو کرتے ہوئے خبردار کیا کہ آئی اے ای اے کی جانب سے کسی بھی سیاسی اقدام کا اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے متناسب، موثر اور فوری جواب دیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

جنگ بندی،یمنی عوام کے مسائل حل کرنے کے لئے مذاکرات کا بہترین موقع ہے،وزیر خارجہ ہشام شرف

صنعا:یمن کی نیشنل سالویشن حکومت کے وزیر خارجہ نے کہا ہےکہ یمنی شہریوں کی اہم …