ہفتہ , 1 اکتوبر 2022

عمران خان نے بجٹ کو عوام اور کاروبار دشمن قرار دے دیا

سابق وزیراعظم و پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے وفاقی بجٹ کو عوام اور کاروبار دشمن قرار دیکر مسترد کردیا۔

عمران خان کا کہنا تھاکہ حکومت کے عوام اور کاروباردشمن بجٹ کو مسترد کرتے ہیں، بجٹ افراط زر اور اقتصادی ترقی کے مفروضوں پر مبنی ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ حساس قیمتوں کا انڈیکس آج 24 فیصد تک جا پہنچا ہے اور اعداد و شمار سے واضح ہے کہ مہنگائی کی شرح 25 سے 30 فیصد ہوگی جو ایک طرف عام آدمی کا بیڑہ غرق کرے گی اور دوسری جانب بلند شرح سود کے باعث معاشی ترقی کی رفتار کم کر دے گی۔

عمران خان کا کہنا تھاکہ ہماری ٹیکس اصلاحات، صحت کارڈ اور کامیاب جوان جیسے عوام دوست منصوبے لپیٹے جا رہے ہیں، پرانے پاکستان کا یہ ایسا میزانیہ ہے جو قوم کیلئے مزید بوجھ اور تکلیف کا سامان کررہا ہے۔

خیال رہے کہ حکومت نے آئندہ مالی سال 23-2022 کا 95 کھرب 2 ارب روپے کا وفاقی بجٹ پیش کردیا جو گزشتہ مالی سال سے 10 کھرب 15 ارب روپے زیادہ ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکہ شام میں تیل کی لوٹ مار سے باز نہیں آ رہا:شامی وزرات پٹرولیم

جدید ترین ہتھیاروں سے لیس امریکی فوجی شامی تیل لوٹنے میں مصروف ہیں ۔اطلاعات کے …