اتوار , 25 ستمبر 2022

تباہ کن بحری جہاز جماران کیش کی بندرگاہ پر لنگر انداز

میرین انڈسٹریز کی نمائش کے موقع پر ایرانی ماہرین کا تیار کردہ تباہ کن بحری جہاز جماران کیش کی بندرگاہ پرلنگر انداز ہوگیا ہے۔

ایران: ایران کا تباہ کن بحری جہاز جماران انتہائی جامع انتظامی نظام سے لیس ہیلی کاپٹر بردار بحری جہاز ہے۔ اس میں سمندر کی سطح اور سمندر کے اندر سفر کرنے والے اہداف کا پتہ لگانے، انہیں کروز میزائلوں اور تارپیڈو سے نشانہ بنانے کی توانائی بھی موجود ہے۔

تباہ کن بحری جہاز چودہ سال سے ایرانی بحریہ کے لیے خدمات انجام دے رہا ہے اور اسے مکمل طور سے ایران کے دفاعی اور سائنسی ماہرین نے مقامی ٹیکنالوجی کی مدد سے تیار کیا ہے۔ یہ بحری جہاز پچانوے میٹر لمبا، گیارہ میٹر چوڑا اور آٹھ میٹر اونچا ہے۔
حربی اور دفاعی دونوں مقاصد کے لیے استعمال ہونے والا یہ بحری جہاز سمندر کی سطح سے سطح پر اور سمندر سے فضا میں مار کرنے والی مختلف توپوں سے لیس ہے۔
ایرانی بحریہ کے سربراہ شہرام ایرانی نے جماران بحری جہاز کے لنگر انداز ہونے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دشمن کو جان لینا چاہیے کہ خطے میں اس کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے اور اس سے ایرانی سمندری حدود میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے سے باز رہنا چاہیے۔

یہ بھی دیکھیں

دمشق اور انقرہ کے درمیان فی الحال کوئی مذاکرات نہیں ہو رہے:شامی وزیر خارجہ

دمشق:شام کے وزیر خارجہ فیصل المقداد کا کہنا ہے کہ دمشق اور انقرہ کے درمیان …