پیر , 26 ستمبر 2022

لوہانسک پر روس کے کنٹرول کی متضاد اطلاعات

سلوویانسک شہر (مشرقی یوکرین) میں لوگ روسی بمباری سے ہونے والی تباہی کو دیکھ رہے ہیں جس میں کل چھے شہری ہلاک ہو گئے۔
گزشتہ روز متضاد اطلاعات موصول ہوئیں کہ روسی افواج نے اسٹریٹجک شہر لیسیچانسک اور اس طرح مشرقی یوکرین کے پورے گورنریٹ لوہانسک پر قبضہ کر لیا ہے۔ جب کہ روسی وزارت دفاع نے "لوہانسک عوامی جمہوریہ کی آزادی” کا اعلان کیا اور کہا کہ یوکرین کی افواج لیسیچانسک کا "مکمل طور پر” محاصرہ کئے ہوئے ہیں۔ بعد میں یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے اعلان کیا کہ شہر کے مضافات میں لڑائی جاری رہے گی، انہوں نے آسٹریلوی وزیر اعظم انتھونی البانیس کے ساتھ ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا: "ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ لیسیچانسک روسی کنٹرول میں ہے۔”
اسی ضمن میں لیسیچانسک سے 75 کلومیٹر کے فاصلے پر مشرقی یوکرین میں سلوویانسک کے میئر نے کل اعلان کیا کہ روسی افواج کی پیش قدمی کے دوران گولہ باری میں چھ افراد مارے گئے ہیں۔ یہ اس وقت سامنے آیا جب بیلاروس نے کیف کی طرف سے داغے گئے میزائلوں کو روکنے کا اعلان کیا اور روس نے یوکرین پر بیلگوروڈ پر تین کلسٹر میزائل فائر کرنے کا الزام لگایا جس میں چار افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

مسلمانوں میں لڑائی جھگڑے،اختلافات کا خاتمہ ہونا چاہیے: مقتدیٰ صدر

بغداد:عراق کے مذہبی اور سیاسی رہنما مقتدی صدر نے مسلمانوں میں لڑائی جھگڑے ، جنگ …