اتوار , 25 ستمبر 2022

ایران اور شنگھانی تعاون تنظیم کے درمیان تجارتی لین دین میں اضافہ

رواں سال موسم بہار کے دوران شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں کے لیے ایران کی نان پیٹرولیم مصنوعات کی تجارت میں تیس فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

ایران کےمحکمہ کسٹم کے ترجمان سید روح اللہ لطیفی نے ہمارے نمائندے سے بات چیت کرتے ہوئےکہا کہ رواں سال موسم بہار کے دوران ایران اور شنگھائی تعاون تنظیم کے گیارہ رکن ملکوں کے درمیان ایک کروڑ تئیس لاکھ چالیس ہزار ٹن نان پیٹرولیم اشیا کا تبادلہ عمل میں آیا جس کی مالیت تقریبا دس ارب ڈالر کے لگ بھگ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مذکورہ اعداد و شمار سے گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں انتیس فی صد اضافے کی نشاندھی ہوتی ہے۔

ایرانی کسٹم کے ترجمان نے مزید کہا کہ دس ارب ڈالر کے اس تجارتی لین دین میں ایران کی برآمدات کا میزانیہ بیس فی صد اضافے کے ساتھ پانچ ارب اکاون کروڑ ڈالر سے زیادہ رہا ہے۔

روح اللہ لطیفی نے بتایا کہ شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں کے درمیان چین، افغانستان، پاکستان، روس اور ازبکستان ایران کی برآمدات میں سرفہرست ہیں جبکہ قزاقستان، تاجکستان، کرغیزستان، بیلاروس اور منگولیا ہماری اگلی منزل ہیں ۔

یہ بھی دیکھیں

مسلمانوں میں لڑائی جھگڑے،اختلافات کا خاتمہ ہونا چاہیے: مقتدیٰ صدر

بغداد:عراق کے مذہبی اور سیاسی رہنما مقتدی صدر نے مسلمانوں میں لڑائی جھگڑے ، جنگ …