ہفتہ , 1 اکتوبر 2022

معاشی اور سیاسی عدم استحکام سے دوچار سری لنکا کو نیا صدر مل گیا

سری لنکا کی پارلیمنٹ میں ارکان نے نئے صدر کے انتخاب کے لیے ووٹ ڈالے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق قائم مقام صدر وکرما سنگھے سمیت 3 امیدوار صدارت کی دوڑ میں شامل تھے۔

پارلیمنٹ کے 225 اراکین میں سے رانیل وکرما سنگھے کو 134 جبکہ دلاس الہپرما کو 82 اورارونا کمارا کو صرف 3 ووٹ ملے۔

نومنتخب صدر رانیل وکرما سنگھے کا کہنا ہے کہ ملک بہت مشکل صورتِ حال سے دوچار ہے، ہمیں مستقبل میں بڑے چیلنجز کا سامنا ہے۔

 قائم مقام صدر رانیل وکرما سنگھے 6 مرتبہ سری لنکا کے وزیرِ اعظم رہ چکے ہیں۔

انہوں نے گزشتہ دنوں صدر گوٹابایا راجہ پاکسے کے ملک سے فرار ہونے کے بعد قائم مقام صدر کا عہدہ سنبھالا تھا۔

صدارتی انتخاب کے موقع پر پارلیمنٹ کے اطراف سیکیورٹی انتہائی سخت کر دی گئی تھی اور ہزاروں سیکیورٹی اہلکاروں کو تعینات کیا گیا تھا۔

بدترین معاشی بحران کے نتیجے میں عوامی احتجاج اور مظاہروں کے باعث سابق صدر ملک چھوڑ کر فرار ہوئے تھے۔

سری لنکا گذشتہ کئی مہینوں سے شدید اقتصادی اور سیاسی بحران کا شکار ہے۔ ملک میں خوراک، ایند ھن اور ادویات سمیت دیگر ضروری اشیا کی شدید قلت ہے۔ حالیہ پرتشدد واقعات میں مظاہرین نے نومنتخب صدر اورچھ بار سری لنکا کے وزیراعظم رہنے والے رانیل وکرما سنگھے کا آبائی گھر بھی نذر آتش کردیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

ایران کا کابل دھماکے میں زخمیوں کی مدد کی پیشکش

تہران: ایران نے افغانستان کے دارالحکومت کابل دھماکے میں زخمیوں کی مدد کے لیے آمادگی …