اتوار , 25 ستمبر 2022

حزب اللہ کی دھمکی، اسرائیل نے گھٹنے ٹیک دیئے

حزب اللہ کے انتباہ کے بعد اسرائیل کے لیے متنازعہ کاریش گیس فیلڈ سے استفادے کا امکان سلب ہوکر رہ گیا ہے۔

اس بات کا اعتراف ایک اسرائیلی اخبار نے کاریش گیس فیلڈ کے بارے میں شائع ہونے والی تازہ ترین رپورٹ میں کیا ہے۔

روزنامہ ھاآرٹس کا کہنا ہے کہ حزب اللہ کے شدید انتباہ کے بعد، اسرائیل کے لیے لبنان کی سرحد پر واقع متنازعہ علاقے کاریش سے گیس نکالنا ممکن نہیں رہے گا ۔ اخبار نے اپنے دفاعی تجزیہ نگار کے حوالے سے بتایا ہے کہ حزب اللہ کی دھمکی کی وجہ سے اسرائیل کو مذکورہ گیس فیلڈ سے گیس نکالنے کا کام موخر کرنا پڑا ہے حالانکہ پہلے اس کام کیلئے رواں سال ستمبر کا وقت مقرر کیا گیا تھا۔
ہاآرٹس کے مطابق حزب اللہ کے انتباہ نے نہ صرف اسرائیل بلکہ یورپ کو بھی توانائی کے حوالے سے تشویش میں مبتلا کردیا ہے جو روسی گیس کے بجائے کاریش گیس فیلڈ سے آس لگائے بیٹھے ہیں۔
ایک اور اسرائیلی آخبار یدیعوت احارونوت نے لکھا ہے کہ تل ابیب کی فوجی ٹیم حزب اللہ کے سربراہ سید حسن نصراللہ کے انتباہ کا بغور جائزہ لے رہی ہے۔
حزب اللہ کے سربراہ سید حسن نصراللہ نے کہا ہے کہ اسرائیل کا کاریش کے علاقے میں گیس کی تلاش کے لیے بحری جہاز بھیجنا لبنان کے اقتدار اعلی کی خلاف ورزی شمار ہوگا اور لبنان کے حقوق کے حصول کے بغیر کسی کو بھی اس گیس فیلڈ سے گیس نکالنے کی اجازت نہیں دی جائے گی

یہ بھی دیکھیں

مسلمانوں میں لڑائی جھگڑے،اختلافات کا خاتمہ ہونا چاہیے: مقتدیٰ صدر

بغداد:عراق کے مذہبی اور سیاسی رہنما مقتدی صدر نے مسلمانوں میں لڑائی جھگڑے ، جنگ …