جمعہ , 7 اکتوبر 2022

حسن نصراللہ کی ایران سے ایندھن کی فراہمی کی تجویز پر عمل کیا جائے، وئام وہاب

حسن نصراللہ نے گذشتہ شب اپنے ایک انٹرویو میں کاریش گیس فیلڈ کی جانب نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ حزب اللہ اپنے اقدامات کو شام، ایران یا دیگر اتحادیوں کے ساتھ مربوط نہیں کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تیل کو درآمد کرنے کے حوالے سے ہمیں کوئی مسئلہ نہیں ہے بلکہ اصل مسئلہ لبنانی حکومت کا ہے۔ میں ایران سے ایندھن درآمد کرنے کے لیے تیار ہوں، بشرطیکہ لبنانی حکومت اسے قبول کرے۔ لیکن لبنان میں کوئی بھی ایسا کرنے کی جرات نہیں کرتا۔ کیونکہ لبنانی حکام اپنے خاندان پر امریکی پابندیوں سے خوفزدہ ہیں۔ آج روسی اور ایرانی کمپنیاں لبنان کے ساتھ تعاون کے لیے تیار ہوسکتی ہیں لیکن حکومت میں ایسا کرنے کی ہمت نہیں ہے۔ یاد رہے کہ گذشتہ سال لبنان میں ایندھن کے بحران کے دوران اسلامی جمہوریہ ایران نے لبنان کو ایندھن کے کئی ٹینکرز بھیجے۔ یہ ٹینکرز حزب اللہ کی حمایت سے لبنان میں داخل ہوئے۔ اس واقعے کا ذکر لبنانی مقاومت کی فتح کے طور پر کیا جاتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

مزاحمتی فرنٹ مغربی کنارے سے لے کر پورے فلسطین تک پھیلے گی: حماس

مقبوضہ بیت المقدس: مقبوضہ بیت المقدس شہر میں فلسطینی اسلامی مزاحمتی تحریک (حماس) کے ترجمان …