بدھ , 17 اگست 2022
تازہ ترین

سائنس کے میدان میں پاکستانی سائنسدانوں کی اہم پیشرفت

پاکستانی سائنسدانوں نے مقامی طور پر ایک ایسا کم خرچ اور مؤثر جراثیم کش کپڑا بنایا ہے جو زخموں پر پٹی، لیب کوٹ، ماسک اور کئی اقسام کی پیکنگ میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔

 ہم جانتے ہیں کہ کئی اقسام کے بیکٹیریا دنیا بھر میں انفیکشن اور امراض کی وجہ بن رہے ہیں۔

بہاؤالدین ذکریا یونیورسٹی میں تجزیاتی کیمیا کی معاون پروفیسر سعادت مجید کی نگرانی میں سائنسدانوں نے ماحول دوست کائٹوسان اور چاندی کے نینوذرات ایک عام کپڑے پر لگائے ہیں جو چار عام لیکن مہلک اقسام کے بیکٹیریا کو روک سکتہ یں۔ یہ کپڑا تمام جملہ ٹیسٹ میں بہت مؤثر ثابت ہوا ہے اور اس کی تفصیلات ہفت روزہ تحقیقی جریدے نیچر، سائنٹفک رپورٹس میں شائع ہوئی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بارشوں اور سیلاب سے افغانستان میں 32 افراد جانبحق۔

کابل:افغانستان کے صوبے پروان میں شدید بارشوں کے باعث سیلاب سے 32 افراد جانبحق اور …