بدھ , 28 ستمبر 2022

فلسطینی اور یمنی نوجوانوں کی بہادری کا جذبہ، اسلامی انقلاب سے متاثر ہے۔سید ابراہیم رئیسی

تہران: اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر سید ابراہیم رئیسی نے کہا ہے کہ سامراج کے خلاف جدوجہد اسلامی انقلاب کے علاقے پر پڑنے والے اثرات کا نتیجہ ہے۔ایرانی میڈیا کے مطابق صدر سید ابراہیم رئیسی نے شہدا کے اہلخانہ سے گفتگو کرتے ہوئے سید الشہدا ء حضرت اباعبداللہ الحسین (ع) کی سوگواری کی تعزیت پیش کرتے ہوئے غزہ پر صیہونی جارحیت کی مذمت کی اور کہا کہ جس استقامت کا آج ہم نظارہ کر رہے ہیں وہ عالمی سامراج کے خلاف جدوجہد اور اپنے زور بازو پر توکل و یقین حاصل کرنے سے متعلق اسلامی انقلاب کے علاقے پر پڑنے والے اثرات کا نتیجہ ہے۔ایران کے صدر نے غزہ کے مظلوم عوام کے خلاف اسرائیل کے متعدد حملوں اور جارحیت کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ آج کے فلسطینی عوام کا اگر ماضی سے موازنہ کیا جائے تو معلوم ہو گا کہ اب فلسطینیوں نے کیمپ ڈیوڈ، شرم الشیخ اور اوسلو معاہدے نیز مذاکرات کی جگہ جدوجہد کرنے کو ترجیح دی ہے اور اس وقت جدت عمل فلسطینی نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے اور یہ سب کچھ مسلط کردہ جنگ اور مدافع حرم کے شہدا کے خون کی مرہون منت ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران ایسا ملک نہیں جس میں کوئی بغاوت اور انقلاب کر سکے:امیر عبداللیہان

نیویارک: ایرانی وزیر خارجہ نے اس بات پر زور دیا کہ "ایران ایسا ملک نہیں …