بدھ , 28 ستمبر 2022

نیو میکسیکو میں دو پاکستانیوں کے قتل کے الزام میں افغان شخص گرفتار

واشنگٹن:امریکی ریاست نیو میکسیکو کی ایلباکرکی پولیس نے شہر میں قتل ہوئے چار میں سے دو مسلمانوں کے قتل کے الزام میں افغانستان سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کو گرفتار کر لیا ہے۔خبررساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق 51 سالہ افغان شہری کو اہم مشتبہ شخص کے طور پر شناخت کیا گیا ہے۔

پولیس چیف ہیرلڈ میدنا کے مطابق ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ یہ اموات نفرت انگیز جرائم میں شمار ہوں گی یا سیریل کلنگ میں۔پولیس نے بتایا کہ تفتیش کاروں کو شہر کی مسلم کمیونٹی کی جانب سے ایک اطلاع ملی جس میں ملزم کی طرف اشارہ کیا گیا جو تقریبا پانچ سال سے امریکہ میں مقیم ہیں۔

پولیس قتل کے پیچھے ممکنہ مقاصد کا جائزہ لے رہی ہے جن میں ایک ’باہمی تنازع‘ بھی شامل ہے۔ پولیس چیف سے گرفتاری کے بعد کسی فرقہ وارانہ عنصر کے حوالے سے بھی پوچھا گیا مگر انہوں نے اس کا براہ راست جواب نہیں دیا۔اسلامک سینٹر آف نیو میکسیکو کے صدر احمد اسد نے مشتبہ شخص کے مقاصد کے بارے میں فی الحال کوئی بھی نتیجہ اخذ کرنے سے خبر دار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملزم ’وقتا فوقتا‘ مرکز کی مسجد میں آتا تھا۔

اس گرفتاری کے اعلان کے بعد متاثرین میں سے ایک مقتول محمد افضال حسین کے بھائی محمد امتیاز حسین نے کہا کہ وہ اب سکون محسوس کر رہے ہیں لیکن وہ مشتبہ شخص اور اس کے مقصد کے بارے میں مزید جاننا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس سے ہمیں امید ہے کہ سچائی ہمارے سامنے آئے گی۔ ہم یہ جاننا چاہتے ہیں کہ ایسا کیوں ہوا ؟۔

 

یہ بھی دیکھیں

ایران مخالف کارروائیاں کرنے والوں کو عبرت کا نشان بنا دیں گے:بریگیڈیئر جنرل "نیلفروشان

بغداد: آئی آر جی سی کے ڈپٹی کمانڈر برائے آپریشنز کے امور نے کہا کہ …