جمعرات , 6 اکتوبر 2022

افغانستان میں ہزارہ طالبان کمانڈر اور طالبان میں لڑائی،ہزارہ طالبان کمانڈر مہدی مجاہد قتل۔

کابل: افغان میڈیا کے مطابق چند ماہ پہلے مولوی مہدی مجاہد طالبان سے اختلافات کے باعث باغی ہوگئے تھے، سابق طالبان کمانڈر بامیان کی ہزارہ برادری سے تعلق رکھتے تھے۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ہزارہ برادری سے تعلق رکھنے والے طالبان کے واحد کمانڈر اور رہنما مولوی مہدی مجاہد کو صوبے ہرات میں ایران کی سرحد کے قریب گولیاں مار کر قتل کردیا گیا۔

مولوی مہدی کو کچھ سال قبل ہی طالبان نے اپنی تنظیم امارات اسلامی افغانستان میں بطور کمانڈر شامل کیا تھا اور وہ ہزارہ برادری سے طالبان میں شمولیت حاصل کرنے والے اب تک واحد کمانڈر تھے۔

افغانستان میں حکومت کے قیام کے بعد طالبان نے مولوی مہدی کو ہزارہ کمیونیٹی کے اکثریتی صوبے کا کمانڈر انچیف مقرر کیا تھا تاہم ان کے اور حکومت کے درمیان فاصلے بڑھتے جارہے تھے۔

ہزارہ کمانڈر مولوی مہدی اور طالبان کے درمیان اختلافات کی خبریں کافی دن سے زیر گردش تھیں اور آج طالبان حکومت کی وزارت دفاع نے مولوی مہدی اور طالبان کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں قتل کی تصدیق کردی۔عالمی خبر رساں ادارے رائٹرز نے اس خبر پر مولوی مہدی کے ترجمان کا ردعمل لینے کی کوشش کی تاہم رابطہ نہیں ہوسکا۔

 

 

یہ بھی دیکھیں

یوکرین کی فوج نے پیش قدمی تیز کر دی ہے:یوکرینی صدر

یوکرینی صدر ولودیمیر زیلنسکی نے کہا ہے کہ ان کی فوج نے ملک کے جنوبی …