ہفتہ , 1 اکتوبر 2022

القاعدہ رہنما ایمن الظواہری کی کابل میں موجودگی امن معاہدے کی خلاف ورزی ہے اس لیے منجمد افغان فنڈز جاری نہیں کریں گے۔امریکا

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے مطابق امریکا کے افغانستان کے لیے خصوصی نمائندے ٹام ویسٹ نے کہا ہے کہ افغانستان کے منجمد فنڈز کی بحالی میں جلد بازی سے کام نہیں لیں گے کیوں کہ اس بات کی کوئی ضمانت نہیں کہ منجمد فنڈز جاری کردیئے جائیں تو یہ رقم دہشت گردوں کے ہاتھوں میں نہیں جائے گی۔

ٹام ویسٹ کے مطابق، طالبان حکومت نے القاعدہ رہنما ایمن الظواہری کو محفوظ پناہ دی جنھیں امریکی انٹیلی جنس نے ڈرون حملے میں مارا۔ اس سے دہشت گرد گروپوں کو فنڈز کی منتقلی کے حوالے سے ہمارے خدشات کو تقویت ملتی ہے۔

یاد رہے کہ امریکا میں افغانسنات کے مرکزی بینک کے سات ارب ڈالر رقم منجمد ہے جس میں ساڑھے تین ارب ڈالر نائن الیون حملے میں ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کو جب کہ آدھی رقم افغانستان کو جاری کی جائے گی۔

یہ بھی دیکھیں

یوکرینی شہروں کے الحاق پر امریکا نے روس پر پابندیاں مزید سخت کردیں

واشنگٹن: صدر پوٹن نے یوکرین کے شہروں کھیرسن، زپوریزہیا، ڈونیٹسک اور لوہانسک اپنا حصہ قرار …