ہفتہ , 1 اکتوبر 2022

 ریاست تلگانہ میں بھی ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں مسلمانوں کو ہراسانی کا سامنا

نئی دہلی : بھارتی ریاست تلگانہ میں بھی مسلمانوں کو ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں بڑے پیمانے پر ہراسانیوں کا سامناہے۔ اترپردیش ، کرناٹک ، گجرات وغیرہ کی طرح تلگانہ میں بی جے پی کی حکومت نہیں ہے لیکن حکمران جماعت تلگانہ راشٹرا سمیتی بھی ہندو توا جیسا رویہ اپنائے ہوئے ہے۔مسلمانوں کو کاروبار سے ایک منصوبہ بند طریقے سے روکا جا رہا ہے۔کورٹلہ علاقے میں ہندو تاجروں نے ایک مسلمان تاجر کو جیولری کی دکان لگانے سے روک دیا۔ انہوں نے مسلمان تاجروں کے خلاف سخت احتجاج کیا اور اس احتجاج میں انہوں نے مسلمانوں کے خلاف زہر اگلنے والے رکن بھارتی پارلیمنٹ ڈی اروند کو بھی بلایا ۔ کرم نگر، مٹ پلی ، کورٹلہ ، جگتیال او دیگر علاقوں میں پولیس مسلمان نوجوانوں کو تھانوں میں طلب کر کے انہیں ہراساں کر رہی ہے جس کی وجہ سے ان علاقوں میں کافی خوف و دہشت پائی جاتی ہے ۔

 

یہ بھی دیکھیں

یوکرینی شہروں کے الحاق پر امریکا نے روس پر پابندیاں مزید سخت کردیں

واشنگٹن: صدر پوٹن نے یوکرین کے شہروں کھیرسن، زپوریزہیا، ڈونیٹسک اور لوہانسک اپنا حصہ قرار …