اتوار , 25 ستمبر 2022

عراق کا فائدہ فیصلہ سازی میں تمام فریقین کی شرکت ہے، سید عمار الحکیم

بغداد:عراق کے قومی حکمت دھارے کے رہنما سید عمار الحکیم نے بغداد میں جاپانی سفیر کے ساتھ ملاقات میں عراق کے فیصلے کرنے میں تمام فریقین اور فریقین کی شرکت پر تاکید کی۔

عراق کی سرکاری خبر رساں ایجنسی (WAA) نے ہفتہ کو اعلان کیا کہ عراق کی قومی حکمت تحریک کے رہنما سید عمار الحکیم نے بغداد میں جاپان کے سفیر کوتارو سوزوکی سے ملاقات اور گفتگو کی۔

رپورٹ کے مطابق اس ملاقات میں الحکیم اور جاپانی سفیر نے عراق کی حالیہ پیش رفت اور اس ملک کے سیاسی تعطل پر تبادلہ خیال کیا۔

اس ملاقات میں عمار الحکیم نے تعمیر نو اور تعمیرات اور پائیدار ترقی کے حصول میں جاپان کے تجربے کو استعمال کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔انہوں نے عراق میں سوزوکی کے سفارتی کردار کی بھی تعریف کی۔

الحکیم نے جاپانی کمپنیوں کی اچھی ساکھ کی طرف بھی اشارہ کیا اور ان کمپنیوں سے عراق میں اہم منصوبوں میں سرمایہ کاری کرنے کا مطالبہ کیا۔

قومی حکمت کی تحریک کے رہنما نے دونوں ممالک کو درپیش سیاسی اور سماجی حالات کی مماثلت کی نشاندہی بھی کی۔

انہوں نے عراق کے موجودہ سیاسی بحران کو آئین کی پاسداری کے ذریعے ختم کرنے کی ضرورت پر بھی تاکید کی اور مزید کہا کہ عراق کو سیاسی، فرقہ وارانہ یا نسلی نقطہ نظر سے کم نہیں کیا جا سکتا کیونکہ فیصلہ سازی میں سب کی شرکت میں ملک کا فائدہ مضمر ہے۔ الحکیم نے ایک بار پھر مطلوبہ اصلاحات اور تبدیلیوں کے حصول کے لیے بات چیت پر زور دیا۔

عراق کے ابتدائی پارلیمانی انتخابات 10 اکتوبر 2021 (اکتوبر 18، 1400) کو ہوئے تھے، لیکن اس تقریب کے 10 ماہ گزر جانے کے باوجود پارلیمان میں سیاسی گروہ اور جماعتیں اور دھڑے سیاسی اختلافات کی وجہ سے نئی حکومت بنانے میں کامیاب نہیں ہو سکے۔

یہ بھی دیکھیں

روس یوکرین جنگ کے اثرات، امریکی شرح سود میں اضافہ، یورپ میں بھی معاشی بحران

نیویارک: روس یوکرین جنگ نے پوری دنیا کو ہلاکر رکھ دیا، امریکا نے شرح سود …