جمعہ , 7 اکتوبر 2022

ایران کا کیمیائی ہتھیاروں کے ذخائر کی ممکل تباہی پر زور

لندن: ہیگ کے دورے پر آئے ہوئے نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے قانونی اور بین الاقوامی امور نے کیمیائی ہتیھاروں کے عدم پھیلاؤ کی تنظیم کے سربراہ "فرناندو آریاس” سے ایک ملاقات میں دنیا بھر میں کسی بھی قسم کے کیمیائی ہتھیاروں کے ذخائر کی ممکل تباہی پر زور دیا۔

"رضا نجفی” نے اس ملاقات آریاس سے میں دونوں فریقین کے درمیان تعاون بڑھانے کی صلاحیتوں پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے ایران کیخلاف مسلط کردہ جنگ کے دوران، کیمیائی ہتھیاروں کا شکار جانبازوں کے علاج اور صحتیابی پر امریکہ کی یکطرفہ اور ظالمانہ پابندیوں کے اثرات کا ذکر کرتے ہوئے ان سے مطالبہ کیا کہ ان جانبازوں کی ضروری طبی خدمات کی فراہمی کیلئے تعاون کرے۔

انہوں نے کیمیائی ہتھیاروں کی ممانعت کے کنونشن کی شقوں پر مکمل، موثر اور غیر امتیازی عمل درآمد کی ضرورت پر بھی زور دیا اور بین الاقوامی تعاون کے حوالے سے کنونشن میں ممالک کی ذمہ داریوں کی تعمیل بالخصوص پُرامن مقاصد کے استعمال کے لیے کیمیائی مواد اور آلات کے تبادلے کی ضرورت سمیت رکن ممالک کے درمیان کیمیائی تجارت کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے اور رکن ممالک کے درمیان کنونشن کے برخلاف یکطرفہ پابندیاں عائد نہ کرنے پر زور دیا۔

نجفی نے اس بات کی یاد دہانی کرائی کہ ایران معاصر تاریخ میں کیمیائی ہتھیاروں کا سب سے بڑا شکار ملک ہے اور اس بات پر زور دیا کہ کیمیائی ہتھیاروں کے کنویشن کے مقاصد تمام کیمیائی ہتھیاروں کی مکمل تباہی اور دیگر ممالک کی اس کنویشن میں شمولیت کے بغیر پورا نہیں ہوں گے۔

یہ بھی دیکھیں

اقوام متحدہ سے ہزارہ برادری کی نسل کشی روکنے کا مطالبہ

کابل:افغانستان کی حزب وحدت اسلامی کے رہنما نے ہزارہ برادری کی نسل کشی روکنے کے …