جمعرات , 6 اکتوبر 2022

پنجاب میں گندم کی امدادی قیمت 3 ہزار روپے فی من مقرر

لاہور  وزیر اعلیٰ پنجاب نے گندم کی امدادی قیمت 3 ہزار روپے فی من مقرر کرنے کی منظوری دے دی، چودھری پرویز الٰہی نے پنجاب کو گندم فراہم نہ کرنے پر وفاق کے رویے پر برہمی کا اظہار بھی کیا، وفاقی حکومت سے باضابطہ احتجاج کیلئے مراسلہ لکھا جائے گا۔

وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا،وفاقی حکومت کی جانب سے پنجاب کو نظر انداز کر کے دیگر صوبوں کو گندم کی فراہمی پر احتجاج کیا گیا، وزیراعلیٰ چودھری پرویز الٰہی نے وفاقی حکومت کے رویے پر برہمی کا اظہار کیا۔وزیراعلیٰ پنجاب نے وفاق سے باضابطہ احتجاج کرتے ہوئے پنجاب حکومت سے وفاقی حکومت کو احتجاجی مراسلہ بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی نے کہا کہ وفاقی حکومت پنجاب کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کر رہی ہے،پنجاب میں بارشوں اور سیلاب سے کئی لاکھ ٹن گندم ضائع ہوئی ہے، صوبے میں 10 لاکھ ٹن گندم کی قلت ہے، وفاق نے پنجاب کی درخواست کے باوجود گندم فراہم نہیں کی۔

وزیراعلیٰ چودھری پرویز الٰہی نے گندم کے کاشتکاروں کیلئے بڑا اعلان کرتے ہوئے گندم کی امدادی قیمت 3 ہزار روپے فی من مقرر کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

پنجاب حکومت نے کابینہ سٹینڈنگ کمیٹی برائے گندم بھی تشکیل دینے کا فیصلہ کر لیا، وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی کمیٹی کے سربراہ ہوں گے۔

یہ بھی دیکھیں

محکمہ ریلوے نے ٹرینوں کی تمام کلاسوں کے کرایے بڑھا دیے

لاہور: ریلوے حکام نے ٹرین آپریشن کی بحالی کے ساتھ ہی ٹرینوں کی تمام کلاسوں …