پیر , 26 ستمبر 2022

سیلاب کے بعد پاکستان کی آدھی آبادی کو غذائی قلت کا خطرہ لاحق

سیلاب کے بعد پاکستان کی آدھی آبادی کو غذائی قلت کا خطرہ لاحق ہوگیا، سندھ اور بلوچستان میں تقریباً 95 فیصد فصلیں تباہ ہوچکی ہیں۔ذرائع کے مطابق مون سون کی معمول سے زیادہ بارشوں اور شدید سیلاب کے باعث ملک کا 70 فیصد فوڈ باسکٹ تقریباً تباہ ہوگیا، سیلاب کے بعد پاکستان کی آدھی آبادی غذائی قلت کے خطرے سے دوچار ہوجائے گی۔

نیشنل فوڈ سیکیورٹی اور خوراک کے متعلقہ سرکاری اداروں نے ابتدائی جائزہ رپورٹ جاری کردی، جس میں بتایا گیا ہے کہ 4 کروڑ کی آبادی کیلئے خوراک کا حصول مشکل ہوسکتا ہے، سندھ اور بلوچستان میں تقریباً 95 فیصد فصلیں تباہ ہوگئیں۔

رپورٹ کے مطابق سندھ میں آئندہ سال 10 لاکھ ایکڑ پر گندم کاشت نہیں ہوسکے گی، کم کاشت کے باعث سبزی، پھل اور اجناس کی قیمتیں بڑھتی رہیں گی، ملک کو 14 ملین ٹن خوراک کی کمی کا سامنا ہوسکتا ہے۔

پاکستان میں جون کے آخری ہفتے سے اگست کے اختتام تک جاری بارشوں کے نتیجے میں ہزاروں مکانات تباہ ہوئے، لاکھوں ایکڑ زرعی زمین متاثر ہوئی جبکہ 1500 کے قریب افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔

یہ بھی دیکھیں

برطانوی حکومت کا غیرملکی ورکرز کیلئے ویزا پروگرام نرم کرنے کا فیصلہ

برطانوی حکومت کی جانب سے ویزا سسٹم میں نمایاں تبدیلیاں لائے جانے کا امکان ہے …