اتوار , 25 ستمبر 2022

چہلم حضرت امام حسینؑ:ملک بھر میں جلوس منزل پر پہنچ کر اختتام پذیر

اسلام آباد:پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج حضرت امام حسینؑ اور ان کے ساتھیوں کا چہلم عقیدت اور احترام کے ساتھ منایا جا رہا ہے۔ملک کے مختلف بڑے شہروں میں ذوالجناح اور تعزیے کے جلوس میں سیکڑوں عزادار نوحہ خوانی کر رہے ہیں جبکہ بڑے شہروں میں سیکیورٹی کے سخت اقدامات کیے گئے ہیں۔

وزارتِ داخلہ نے جمعے کو چاروں صوبوں کے ساتھ اسلام آباد، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر میں انسدادِ دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ 4 (3)(i) کے تحت فوجی دستے تعنیات کردیے تھے۔ملک بھر میں سیکیورٹی کی مجموعی صورت حال کی نگرانی کے لیے وزارت میں ایک مرکزی کنٹرول روم بھی قائم کیا گیا ہے۔

کراچی
کراچی کا مرکزی جلوس نشتر پارک سے دوپہر ایک بجے برآمد ہوا جو روایتی راستوں سے ہوتا ہوا کھارادر میں امام بارگاہ حسینہ ایرانیان پر اختتام پذیر ہوگا۔اس کے علاوہ مارٹن کوارٹرز میں واقع امام بارگاہ سے بھی ایک جلوس نکالا گیا، جو دوپہر 2 بجے گرومندر سے ایم اے جناح روڈ پر نشتر پارک سے برآمد ہونے والے مرکزی جلوس میں شامل ہوا۔

جلوس میں شامل عزاداران سرشاہنواز بھٹو روڈ، محفلِ شاہِ خراسان، ایم اے جناح روڈ، مینسفیلڈ اسٹریٹ، پریڈی اسٹریٹ اور بولٹن مارکیٹ سے گزریں گے۔کراچی ٹریفک پولیس کی ایک بج کر 40 منٹ پر اپڈیٹ کے مطابق چہلم کا جلوس شاہ خراساں سے گزر رہا تھا۔جلوس کی گزرگاہ سے منسلک تمام راستے ٹریفک کے لیے بند ہیں جبکہ موبائل فون کی سروسز بھی معطل ہیں۔

لاہور
لاہور کے ڈی آئی جی آپریشنز افضال احمد کوثر نے ذرائع کو بتایا کہ جلوس کے راستوں پر8 ہزار سے زائد پولیس افسران اور اہلکار تعینات ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ کمیونٹی رضا کاروں، ایلیٹ و انسدادِ فسادات فورس اور سادہ لباس پولیس جوان بھی تعینات کیے گئے ہیں۔

اسلام آباد اور راولپنڈی
اسلام آباد پولیس نے کہا ہے کہ چہلم کا مرکزی جلوس خیروعافیت سے گزرا گیا۔اسلام آباد پولیس کا ٹوئٹ میں کہنا تھا کہ محرم اور صفر میں تمام شیعہ سنی اجتماعات، جلوس اور محافل خیر خیریت سے گزری ہیں، سوشل میڈیا پر مذہبی انتشار پھیلانے اور پراپیگنڈہ سے گریز کیا جائے، ذہنی انتشار پھیلانے اور پراپیگنڈہ کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جا سکتی ہے۔

دوسری جانب، راولپنڈی میں بھی چہلم کا جلوس رواں دواں ہے، رپورٹ کے مطابق آج شہر میں اسکول، کالجز اور مارکیٹیں بند رہیں گی۔پولیس نے ٹریفک پلان تیار کیا ہے اور ہفتے کو 3 ہزار 600 سے زیادہ پولیس اور 236 وارڈنز کو تعینات کیا گیا ہے۔

ٹریفک پلان کے تحت 12 مقامات پر متبادل راستے رکھے گئے ہیں جبکہ جلوس کے راستوں کے ساتھ چھتوں، گلیوں اور سڑکوں پر اسنائپرز تعینات ہیں اور سڑکوں، گلیاں خاردار تاریں، بیرئرز لگا کر مکمل طور پر سیل کر دی گئی ہیں۔

چنیوٹ/رجوعہ سادات

رجوعہ سادات میں مرکزی جلوس دوپہر ایک بجے برآمد ہوا جو روایتی راستوں سے ہوتا ہوا مرکزی امام بارگاہ کربلا پر اختتام پذیر ہوا۔اس کے علاوہ رہائش گاہ سید نثار کاظمی مرحوم کے گھر سے بھی ایک جلوس نکالا گیا،جلوس سے پہلے مجلس عزا کا انعقاد ہوا جس میں مولانا تصور عباس جوادی صاحب نے ذکر امام حسین علیہ السلام بیان کیا،مجلس کے اختتام پر شبیہ ذوالجناح برآمد ہوا۔

بعدازاں جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا امام بارگاہ مہاجرین پہنچ کر سہ پہر 3 بجے مرکزی جلوس میں شامل ہوگیا۔مرکزی جلوس میں خواتین،بچے،بوڑھوں سمیت ہزاروں عزاداران امام حسینؑ نے شرکت کی۔

یہ بھی دیکھیں

PTI پارٹی رہنما حامد خان کا فواد چوہدری کے حوالے سے بڑا انکشاف

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے بانی رکن حامد خان نے پارٹی رہنما اور پی …