جمعرات , 6 اکتوبر 2022

عمران خان میں مسٹر ایکس وائے کا نام لینے کی ہمت تک نہیں،مریم نواز

اسلام آباد: ن لیگ کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ عمران خان میں مسٹر ایکس وائے کا نام لینے کی ہمت تک نہیں۔مریم نواز نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان جن کو ذمہ دار ٹھہرا رہے ہیں ،ان کا نام کیوں نہیں لیتے ؟ عوام سے کہتےہیں خوف کا بت توڑ دیں، عمران خان میں تو مسٹر ایکس وائے کا نام لینے کی ہمت تک نہیں، قوم کو ڈرانا دھمکا عمران نیازی کا طریقہ واردات ہے، عمران خان کا طریقہ کار یہی ہے ڈراؤ،دھمکاؤ اور اپنا راستہ صاف کرو۔

مریم نواز نے کہا کہ عمران نیازی کھلےعام اداروں کو للکارتے ہیں عدالتوں کو نظرکیوں نہیں آ رہا، اس روش کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیے، عمران خان جلسے میں للکارتے ہیں اور رات کے اندھیرے میں پاؤں پڑجاتے ہیں،خفیہ ملاقاتیں کرنےوالاہرجگہ رسوا ہوگا۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ کل جو کالز کروارہا تھا آج وہ کہہ رہےہیں میرے اراکین کو کالز آرہی ہیں، دھمکیوں کا ثبوت ہے تو سامنے لاؤ، عمران خان نے پارٹی اجلاس میں کہا کون کس سےملاقات کررہاہے، کیاعمران خان نے اپنی پارٹی کو ملاقاتوں پر اعتماد میں لیاتھا، آپ نے کبھی پارٹی کو بتایا کہ آپ کس کس سے ملتے ہیں؟ کس کس سے خفیہ ملاقاتیں کرتے ہیں؟ 2014 کے دھرنے کے دوران راحیل شریف سے ملنے ہنستے ہنستے گئے۔

مریم نواز نے کہا کہ اب آرمی چیف کی تعیناتی پر آ کر بات رک گئی ہے، وہ کہتے ہیں میری پسند کا آرمی چیف تعینات نہ کیا تو پورے ادارے کو بدنام کروں گا اور ان کے چہرے سیاہ و داغدار کردوں گا، حالانکہ ان میں ایسے افسران بھی ہیں جنہوں نے اس عہدے تک پہنچنے کےلیے اپنی پوری زندگی دی ہے، وہ جن کے لاڈلے ہیں وہ انہیں لاڈلا نہیں سمجھتے بلکہ بس ان سے اپنا کام نکلوانا چاہتے ہیں۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ نواز شریف واپس آئیں گے ان کے کیس میں دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہوگا، نیب نے میرے کیس میں جو راہ فرار اختیار کی ہے یہ بات شوکت عزیز صدیقی اور رانا شمیم کو درست ثابت کرتی ہے۔

نائب صدر ن لیگ نے مزید کہا کہ بجلی کے بلوں میں اضافہ عوام کی قوت سے باہر ہے، عوام کو بہت تکلیف کا سامنا ہے، یہ آئی ایم ایف معاہدے کے ثمرات ہیں، اس کا ذمہ دار عمران خان ہے۔

یہ بھی دیکھیں

اسلام آباد ہائیکورٹ نے پی ٹی آئی ارکان کے استعفے سیاسی تنازعہ قرار دیدیا

اسلام آباد:اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے ہیں کہ …