ہفتہ , 26 نومبر 2022

کیوبا میں ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی قرار دینے پر ریفرنڈم

ہوانا: کیوبا میں ہم جنس پرستوں کی شادی، ان کے بچہ گود لینے اور سروگریسی کے ذریعے والدین بننے والے جوڑے کے حقوق سے متعلق تاریخی ریفرنڈم کا انعقاد کیا جا رہا ہے اور 50 فیصد سے زائد افراد کے حق میں ووٹ دینے پر اسے قانونی قرار دیدیا جائے گا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق کیوبا میں آج ہونے والے ریفرنڈم میں 16 سال سے زائد عمر کے 80 لاکھ ووٹرز ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی قرار دینے اور ان کے بچوں کے حقوق سے متعلق حقِ رائے دہی استعمال کر رہے ہیں۔

اگر 50 فیصد سے زائد افراد ریفرنڈم کے حق میں ووٹ دیتے ہیں تو ملک میں 1975ء سے نافذ خاندانی ضابطہ ختم ہوجائے گا۔ حکومت نے بھی شہریوں سے ریفرنڈم کے حق میں ووٹ ڈالنے پر زور دیا ہے۔
ریفرنڈم میں ہم جنس پرستوں کی شادی، بچہ گود لینے اور سروگریسی کے ذریعے حمل کی اجازت دی جائے گی اور سرگرویسی کے نتیجے میں بننے والے غیر حیاتیاتی والدین کو زیادہ حقوق دیے جائیں گے۔

اگر ریفرنڈم منظور ہو گیا تو ملک میں شادی کو مرد اور عورت کی بجائے دو افراد کے درمیان ملاپ کے طور پر دیکھا جائے گا چاہے ان کی جنس یکساں ہو۔

یہ بھی دیکھیں

یوکرین میں روسی سرحدوں کے قریب جراثیمی ہتھیار بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے، ریابکوف

ماسکو:روس کے نائب وزیر خارجہ نے ایک بار پھر اعلان کیا ہے کہ ایسی دستاویزات …