بدھ , 30 نومبر 2022

کیلیفورنیا میں قدرتی گیس کی بھٹیوں اور ہیٹرز کا استعمال ختم کرنے کی تیاریاں

کیلیفورنیا: امریکی ریاست کیلیفورنیا 2030 تک قدرتی گیس کی بھٹیوں اور ہیٹرز کا استعمال ختم کرنے کی تیاریاں کر رہی ہے۔ آلودگی سے لڑنے کے لیے اس قسم کا قدم اٹھانے والی یہ امریکا کی پہلی ریاست ہے۔

امریکی ریاست کی جانب سے منظور کی گئی کیلیفورنیا ایئر ریسورسز بورڈ(CARB) کی پیش کردہ تجویز کا مقصد ریاست میں نائٹروجن آکسائیڈ کی آلودگی سے نمٹنا ہے۔

تاہم، منصوبے کے اطلاق کی لاگت 96.2 ارب ڈالرز ہوگی اور اس مد میں برقی آلات کے لیے ادائیگی نئے گھر مالکان کو کرنی ہوگی۔یہ رپورٹ کیلیفورنیا کی جانب سے ایندھن سے چلنے والی نئی گاڑیوں کی فروخت پر عائد کی جانے والی پابندی کے بعد سامنے آئی ہے۔

کارب چیئر لیانے رینڈولف کا ایک بیان میں کہنا تھا کہ جہاں یہ لائحہ عمل کیلیفورنیا کے تمام افراد کے لیے ہوا کو صاف کرے گا وہیں یہ کئی کم آمدنی والے اور محروم کمیونیٹیز، جن کو فضائی آلودگی کا سامنا زیادہ ہوتا ہے، میں آلودگی کے اخراج کو کم کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ اوزون معیار کو حقیقی طور پر پانے کے لیے کیلیفورنیا کو وفاق کی جانب سے لیے جانے والے مزید ایکشن کی ضرورت ہے تاکہ وفاق کے زیر اختیار ذرائع سے پھیلنے والی ڈیزل کی آلودگی کو صاف کیا جاسکے۔ ان ذرائع میں لوکوموٹِوز، سمندری جہاز اور ہوائی جہاز شامل ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم کیلیفورنیا کے لوگوں کو وفاقی حکومت کی مدد کے بغیر صاف ہوا مہیا نہیں کی کرسکتے۔

یہ بھی دیکھیں

50 کروڑ صارفین کا واٹس ایپ ہیک؛ زکر برگ نے ڈیٹا محفوظ کرنے کا طریقہ بتادیا

ہیکرز نے دنیا بھر میں واٹس ایپ کے تقریباً 50 کروڑ صارفین کا ڈیٹا ہیک …