بدھ , 30 نومبر 2022

ہم، یونان کو ترکیہ پر مسلط کرنے والوں کی نیت سے بخوبی واقف ہیں:اردگان

انقرہ:ترکیہ کے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ” ہم یونان کو بتا دینا چاہتے ہیں کہ یہ آپ کی غلط فہمی ہے کہ امریکہ اور یورپ سے آنے والی امداد آپ کو بچا لے گی؟ یہ امداد آپ کو بچا نہیں سکے گی۔ اس سے آپ صرف شوبازی ہی کر سکتے ہیں”۔

صدر ایردوان نے دارالحکومت انقرہ میں جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی کے توسیع شدہ ضلعی سربراہی اجلاس سے خطاب کیا۔خطاب میں انہوں نے کہا ہے کہ” ترک شہریوں کا خون بہانے والوں کو، یونان کے لاوریون کیمپ سمیت یورپ کے تقریباً تقریباً سب ممالک میں پشت پناہی مل رہی ہے اور یہ قاتل ہر جگہ کھُلے عام دندناتے پھِر رہے ہیں”۔

انہوں نے کہا ہے کہ "جیسے جیسے شام اور شمالی عراق میں دہشت گردی کے گڑھ تباہ ہو رہے ہیں۔ دہشت گرد تنظیم کے رکن بعض ممالک میں کھُلے بندوں کیمپ کھول رہے ہیں۔ ہمیں ہمسائیگی کے حقوق کا درس دینے والے ممالک کو سب سے پہلے ان انسان اور جمہوریت دشمنوں کی طرف لاپرواہی سے باز آئیں”۔

صدر ایردوان نے ترکیہ کے ہمسایہ ممالک سمیت تمام ممالک سے، کسی قسم کی تفریق کئے بغیر، دہشت گرد تنظیموں کے خلاف ضروری حفاظتی تدابیر اختیار کرنے کی اپیل کی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ "ہم، یونان کو اُکسا کر ترکیہ پر مسلط کرنے والوں کی نیّتوں سے، بخوبی واقف ہیں۔ مغربی تھریس اور جزائر میں جمع کیا گیا اسلحہ ہمارے لئے کوئی مفہوم نہیں رکھتا کیونکہ ہماری طاقت اور امکانات اس سب سے بہت بڑھ کر ہیں۔ لیکن ہم یونان کو یہ ضرور یاد دلانا چاہیں گے کہ درپیش صورتحال ایک خفیہ قبضے کا مفہوم رکھتی ہے”۔

صدر رجب طیب ایردوان نے یونان کو مخاطب کر کے کہا ہے کہ ” آپ کا سمجھتے ہیں کہ امریکہ اور یورپ سے آنے والا اسلحہ آپ کو بچا لے گا؟ یہ اسلحہ آپ کو بچا نہیں سکے گا۔ اس سے آپ صرف شوبازی کر سکتے ہیں”۔

 

یہ بھی دیکھیں

ایران اور ترکی کے وزرائے خارجہ کا ترکی اور شام کی سرحدوں میں کشیدگی میں اضافے پر تبادلہ خیال

تہران:ایران اور ترکی کے وزرائے خارجہ کا ترکی اور شام کی سرحدوں میں کشیدگی میں …