ہفتہ , 26 نومبر 2022

اسرائیلی ظالمانہ پالیسیوں کا نوٹس لیا جائے: حماس

مقبوضہ بیت المقدس:حماس نے مغربی کنارے کے علاقے میں ایک نو عمر فلسطینی ریان سلیمان کی شہاد کے واقعے پر اسرائیلی قابض فوج کی اذیت پسندانہ پالیسیوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے فلسطینی بچوں اور بڑوں کے خلاف اسرائیلی اذیت پسندی جاری ہے۔ جس کا علاج صرف مزاحمتی جذبے اور عمل کو تیز کرنا ہے تاکہ ناجائز قبضے سے اہل فلسطین کو جلد نجات مل جائے۔

حماس کی طرف سے جمعرات کے روز جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے ریان سلیمان کی شہادت اسرائیلی جبر اور اذیت پسندی کی تازہ مثال ہے۔

حماس کی طرف سے ریان سلیمان کے اہل خانہ سے تعزیت بھی کی گئی ہے۔ واضح رہے کم سن ریحان سلیمان کی بیت الحم میں اس وقت اپنی جان سے ہاتھ دھونا پڑے جب اسرائیلی قابض فوج اس کا پیچھا کر رہی تھی کہ اسی دوران اس دل کا دورہ پڑا اور وہ گر کر شہید ہو گیا۔

ترجمان حماس نے اس سلسلے میں جاری کیے گئے اپنے بیان میں کہا ہے ان شہادتوں کی بڑھتی ہوئی تعداد سے اسرائیلی قابض فوج کا فلسطینیوں پر قبضہ مستحکم نہیں ہو سکے گا بلکہ فلسطینیوں کا جذبہ مزاحمت مضبوط تر ہوگا اور فلسطینی اپنی زمین، حقوق اور قبلہ اول کی حفاظت کے لیے پہلے سے زیادہ پر عزم ہوں گے۔

حماس کی طرف سے مطالبہ کیا گیا کہ عالمی سطح پر انسانی حقوق کے لیے آواز اٹھانے والی تنظیمیں اسرائیلی ظلم و جبر کو دنیا کے سامنے بے نقاب کریں اور فلسطینیوں کے حق میں موثر آواز اٹھائیں۔ خصوصا فلسطینی بچوں کے خلاف اسرائیلی قابض اتھارٹی کے مظالم کی مذمت کرتے ہوئے ان مظالم کے خلاف اقدامات کیا جائیں۔

یہ بھی دیکھیں

خیبرپختونخوا: ٹی ٹی پی دہشتگردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں 2 فوجی اہلکار شہید

بنوں:خیبرپختونخوا کے ضلع بنوں کی تحصیل لکی مروت میں وانڈا پشان کے قریب سیکیورٹی فورسز …