ہفتہ , 26 نومبر 2022

پوپ فرانسس کی یوکرین اور روس سے جنگ بندی کی اپیل

روم : پاپائے روم فرانسس نے روس اور یوکرین کے سربراہان سے جنگ بندی کی دردمندانہ اپیل کی ہے ان کا کہنا ہے کہ جنگ ایک غلطی اور ہولناکی ہے۔یہ بات پوپ فرانسس نے روم میں سینٹ پیٹرز باسیلیکا میں ایک بڑے اجتماع سے خطاب کے دوران کہی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق پاپائے روم فرانسس نے یوکرین میں جاری جنگ بند کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ تمام ملکوں کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کا احترام کیا جانا چاہیے۔

انہوں نے روسی فیڈریشن کے صدر ولادیمیر پیوٹن اور یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ خدا اور انسانیت کے احساس کے نام پر آپ سے فوری جنگ بندی کی اپیل کرتا ہوں۔

پوپ فرانسس کا کہنا تھا کہ روس یوکرین معاہدے میں اقلیتوں کے جائز قانونی حقوق کا خیال رکھا جائے، دونوں سربراہان تشدد اور موت کے سلسلے کو ختم کرتے ہوئے امن تجاویز کے لیے اپنے دروازے کُھلے رکھیں۔

پوپ نے بین الاقوامی برادری پر بھی زور دیا کہ وہ اس غیر انسانی المیے کو ختم کرنے اور بات چیت کے عمل کو فروغ دینے کے لیے جو کچھ بھی کرسکتے ہیں ضرور کریں۔

علامتی تصویر

واضح رہے کہ یوکرین میں اس وقت میزائلوں اور گولہ بارود سے حملوں کا سلسلہ جاری ہے،روسی فوج یوکرین کے دارالحکومت کیف سمیت کئی علاقوں میں پہنچ چکی ہے اور یوکرین کی فوج بھی اپنی پوری طاقت کے ساتھ ان کا مقابلہ کر رہی ہے۔

اس دوران اب تک مجموعی طور پر 114 ہلاکتوں کی خبریں سامنے آچکی ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق 54 یوکرینی فوجی اور 10 شہری روسی حملے میں ہلاک ہوئے ہیں۔

علاوہ ازیں تازہ ترین اطلاعات کے مطابق یوکرین نے روس کے 50 فوجیوں کو مارنے اور 6 جنگی طیارے و 4 ٹینکس تباہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ روس نے یوکرین پر تین جانب سے حملہ کیا ہے، کیف میں ایک یوکرینی جنگی طیارہ کے حادثہ کا شکار ہونے کی بھی اطلاع موصول ہو رہی ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

روس کیخلاف پابندیوں کا 9واں پیکج تیار کر رہے ہیں:یورپی یونین کمیشن

کیف:روس کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے میں یوکرائن کے 50 فوجیوں کو رہا کر دیا …