پیر , 5 دسمبر 2022

شام سے ترک حمایت یافتہ دہشت گردوں کو روس کے خلاف لڑنے کے لیے یوکرین بھیجنے کا انکشاف

دمشق:شامی اپوزیشن کے بعض ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ دہشت گرد عناصر اور ترکی کے قریب ملیشیا کے ایک گروپ کو شام کے صوبہ ادلب سے روس کے خلاف لڑنے کے لیے یوکرین بھیجا گیا ہے۔

الوطن اخبار کے حوالے سے شامی حزب اختلاف کے بعض ذرائع نے شام کے شہر ادلب میں دہشت گرد گروہوں اور ترکی کے قریب مسلح ملیشیا کے عناصر کے حوالے سے کہا ہے کہ "القاعدہ” سے وابستہ درجنوں دہشت گردوں نے شام کے شہر ادلب میں دہشت گرد گروہوں کے عناصر کو نشانہ بنایا ہے۔ محاذ النصرہ (اب حیات تحریر الشام) کے سابق دہشت گرد گروہ کی حمایت اور دباؤ حال ہی میں روس کے خلاف لڑنے کے لیے ادلب سے یوکرین گئے تھے۔

الوطن ذرائع نے نوٹ کیا: النصرہ فرنٹ کے سینیئر رہنما ابو محمد الجولانی نے دہشت گرد رہنماؤں سے ملاقات کی، جن میں سے زیادہ تر چیچن، روسی اور ایغور ہیں،اور ان کی ملاقات ایک "غیر ملکی بریگیڈ” کی صورت میں ہوئی جو یوکرین جانے کی ترغیب دی گئی۔

ان ذرائع نے اس بات پر بھی تاکید کی: الجولانی نے ان دہشت گردوں سے پرجوش مالی وعدے کیے ہیں جو روس کے خلاف لڑنے کے لیے یوکرائنی افواج میں شامل ہونے کے لیے تیار ہیں، کیونکہ یہ انتہا پسند تکفیری دہشت گرد میدان جنگ میں اپنی شرکت پر غور کر رہے ہیں.

ان ذرائع نے مزید کہا: جبہت النصرہ کے سینئر رہنما نے دہشت گردوں سے کہا کہ ان سب کا مشترکہ دشمن روس ہے اور اس سے نجات کا واحد راستہ ادلب سے نکل کر یوکرین جا کر روسیوں کے خلاف لڑنا ہے۔

شامی حزب اختلاف کے ان ذرائع نے ادلب سے یوکرین تک دہشت گردوں کے راستے کے بارے میں کہا: شام میں "خربہ الجوز” کی غیر قانونی کراسنگ ترکی جانے کے لیے سب سے اہم کراسنگ ہے اور ان مشنوں کو انجام دینے کے لیے ترکی کی انٹیلی جنس تنظیم ضروری لاجسٹک مدد فراہم کرتی ہے۔ اس کے علاوہ ادلب کے شمال مغرب میں واقع شہر درکوش کے قریب غیر قانونی گزرگاہیں اور یہاں تک کہ اس صوبے کے شمال میں باب الحوی کراسنگ بھی اس میدان میں سرگرم ہیں۔

اس رپورٹ کے مطابق گزشتہ دو ہفتوں کے دوران 70 سے زائد دہشت گرد ادلب سے یوکرین گئے، ان میں بعض دہشت گردوں کے سرغنہ بھی شامل ہیں، جن میں "قفقاز سپاہیوں” کے نام سے مشہور گروپ کا سربراہ عبدالحکیم الشیشانی بھی شامل ہے۔

دوسری جانب ان ذرائع نے تاکید کی ہے کہ دہشت گرد گروہوں نے اس ہفتے کے دوران مسلسل دوسرے دن شمالی شام میں ڈی ایسکلیشن زون میں فوجی پوائنٹس پر حملہ کیا جس پر شامی فوج کی جانب سے سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑا۔

یہ بھی دیکھیں

موساد کو اسرائیل کے حکام کی ناکامی کا علم ہے: ایران

تہران:ایران کے ایک اعلی سکیورٹی آفیسر نے کہا ہے کہ اسرائیل کی بد نام زمانہ …