منگل , 29 نومبر 2022

ہمیں امید ہے کہ پوپ فرانس دورہ بحرین کے موقع پر سچ بولیں گے:نظر بند بحرینی علماء

منامہ:بحرینی حکومت کی جیلوں میں قید علماء نے پوپ فرانسس کے نام ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ وہ امید کرتے ہیں کہ وہ اپنے آئندہ دورہ بحرین میں سچ بولیں گے اور ایمان کی دعوت پر لبیک کہیں گے۔

بحرینی حکومت کی جیلوں میں نظربند بحرینی علماء نے پوپ فرانسس کو جو 3 سے 6 نومبر تک بحرین کا سفر کر رہے ہیں، "مشرق و مغرب مذاکرات” کے اجلاس میں شرکت کے لیے اپنا بیان جاری رکھتے ہوئے لکھا: ” آپ کے دورے سے ہم بحرین کو امن، اصلاحات اور انصاف کے محافظ کے طور پر خوش آمدید کہتے ہیں۔ جان لے آپ اس سرزمین میں قدم رکھ رہے پے جہاں اس ملک کی قوم کے لیے رواداری اور بقائے باہمی کا نعرہ بلند ہوتا ہے اور اس میں عدل و احسان بیان کیا جاتا ہے، لیکن وہاں ظلم و ناانصافی پھیلی ہوئی ہے۔

شیخ «عبدالجلیل المقداد»، شیخ «سعید النوری»، شیخ « محمد حبیب المقداد» و «شیخ علی سلمان» سیاسی زیر حراست بحرین کے علماء ہیں، جن کے نام سے یہ بیان شائع کیا گیا تھا۔

آل خلیفہ کی جیلوں میں ان چار قیدیوں کے بیان میں کہا گیا ہے: "اس سرزمین کے لوگ مرنے والوں، سوگوار ماؤں، زخمیوں، قیدیوں، مطلوب افراد اور اپنے وطن سے جلاوطن افراد اور ان خاندانوں میں شامل ہیں جو صبر کے ساتھ اپنی سرزمین پر قائم رہے۔” باسیونی رپورٹ اور دیگر بین الاقوامی انسانی حقوق کی تنظیموں نے اس سرزمین کے لوگوں کے خلاف خلاف ورزیوں کے کئی مقدمات درج کیے ہیں۔

گرفتار علماء نے پوپ کو مخاطب کرتے ہوئے مزید کہا: "اصلاح، انصاف اور انسانی وقار تمام آسمانی پیغامات کے مشترکہ اہداف ہیں جو ملک میں لوگوں پر ظلم اور بدعنوانی کو قبول نہیں کرتے۔” یہ وہ تمام اہداف ہیں جن کے حصول کے لیے اس ملک کے لوگوں نے کوشش کی اور ان کے حصول کے لیے بڑی قربانیاں دیں۔

اپنے بیان کے آخر میں ان چاروں بحرینی علماء نے امید ظاہر کی کہ پوپ فرانسس اپنے دورہ بحرین کے دوران سچ بولیں گے اور "ایمان اور عقل کی پکار پر لبیک کہیں گے۔” بحرین کے لوگ ہمیشہ آسمانی مذاہب کے ماننے والوں اور دوسرے لوگوں کے ساتھ رہے ہیں جیسا کہ ان کا ماضی اور حال گواہی دیتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بی جے پی کے رکن اسمبلی کی غنڈہ گردی؛ بس اسٹینڈ پر بنے گنبدوں کو ہٹادیا

میسور: کرناٹک میں مودی سرکار کے رکن اسمبلی نے ایک بس اسٹاپ پر بنے اسٹینڈ …