جمعرات , 1 دسمبر 2022

یوکرین یورپ و امریکہ کے بایولوجیکل ہتھیاروں کی تجربہ گاہ ہے:روسی صدر

ماسکو:روس کے صدر نے کہا ہے کہ یوکرین کی سرزمین یورپ و امریکہ کے جراثیمی ہتھیاروں کی آزمائش کے میدان میں تبـدیل ہو گئی ہے اور یوکرین کو یہ ہتھیار وسیع پیمانے پر فراہم کئے گئے ہیں۔

روسی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق روس کے صدر ولادیمیر پوتین نے مغرب کی جانب سے یوکرین کو اپنے جراثیمی ہتھیاروں کی آزمائش کے میدان میں تبدیل کئے جانے پر سخت انتباہ دیتے ہوئے اعلان کیا کہ یوکرین کی حکومت امریکہ کی خارجہ پالیسی کا ہتھکنڈہ بن گئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ سابق سوویت یونین کے زوال کے بعد امریکہ نے یوکرین، جارجیہ، ازبکستان، جمہوریہ آذربائیجان اور قزاقستان جیسے ممالک کو اپنے جراثیمی ہتھیاروں کی آزمائش کے مقامات میں تبدیل کر دیا اور روس و چین کی سرحدوں کے قریب اس قسم کا اقدام علاقے اور ماحولیات کی سلامتی کے لئے بڑا خطرہ نیز بین الاقوامی قوانین منجملہ انیس سو بہتر کے کنوینشن کے خلاف ہے۔

 

یہ بھی دیکھیں

آسٹریلوی وزیراعظم کا امریکا سے وکی لیکس کے بانی جولیان اسانج کیخلاف کارروائی ختم کرنے کا مطالبہ

کینبرا:آزادی اظہار کے لیے سرگرم کارکن اور وکی لیکس کے بانی جولیان اسانج خفیہ دستاویزات …